راجستھان میں بی ایس پی کو جھٹکا، تمام چھ ممبران اسمبلی نے کانگریس کا دامن تھام لیا

Share Article

راجستھان میں بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔ بی ایس پی کے تمام چھ رکن اسمبلی ریاست میں حکمراں پارٹی کانگریس میں شامل ہو گئے ہیں۔ پیر کی رات ممبران اسمبلی نے راجستھان اسمبلی اسپیکر کو خط لکھ کر کانگریس میں شامل ہونے کی بات کہی۔ خط میں بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) اراکین اسمبلی نے کہا کہ وہ اپنی مجلس قانون ساز کا کانگریس میں انضمام کر رہے ہیں۔ اسمبلی اسپیکر سی پی جوشی نے اس کی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ’بی ایس پی ممبران اسمبلی نے ان سے ملاقات کی اور انضمام کے بارے میں ایک خط انہیں سونپا ہے‘۔

بی ایس پی کے چھ ممبران اسمبلی میں راجندر سنگھ گوڑھا، جوگیندر سنگھ اوانا، واجب علی، لکھن سنگھ مینا، سندیپ یادو اور دیپ چند شامل ہیں۔ بی ایس پی ممبران اسمبلی کے کانگریس میں انضمام سے ریاست کی اشوک گہلوت حکومت مزید مضبوط اور مستحکم ہو جائے گی۔ ریاست کی 200 سیٹوں والی اسمبلی میں کانگریس کے اپنے اور اس کی اتحادی راشٹریہ لوک دل (آر ایل ڈی)کے ملاکر100 رکن اسمبلی ہیں۔

حکمراں کانگریس پارٹی کو 13 آزاد اراکین اسمبلی میں سے 12 کے باہر سے حمایت حاصل ہے اور ان تمام نے سال کے شروع میں کانگریس کی شمولیت اختیا ر کر لی تھی۔اب بی ایس پی کے چھ ممبران اسمبلی کے شا مل ہونے حکومت کو مزید مضبوطی ملی ہے۔ جبکہ دو نشستیں خالی ہیں۔ ریاست میں 2009 میں بھی اشوک گہلوت کی پہلی مدت کے دوران، بی ایس پی کے تمام چھ ممبران اسمبلی نے کانگریس کا دامن تھام لیا تھا اوراس وقت کی حکومت کو مستحکم بنایا تھا۔ اس وقت حکومت واضح اکثریت سے پانچ کم تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *