سپریم کورٹ میں راہل گاندھی کی معافی منظور، نہیں چلے گا توہین کا کیس

Share Article

 

ہتک عزت کیس میں کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کو راحت ملی ہے. سپریم کورٹ نے راہل گاندھی کی معافی کو منظور کر لیا. اس کے ساتھ ہی عدالت نے صاف کہہ دیا کہ اب راہل کے خلاف کوئی توہین کا کیس نہیں چلے گا۔

ہتک عزت کیس میں کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کو راحت ملی ہے. سپریم کورٹ نے راہل گاندھی کی معافی کو منظور کر لیا. اس کے ساتھ ہی عدالت نے صاف کہہ دیا کہ اب راہل کے خلاف کوئی توہین کا کیس نہیں چلے گا. اپنے فیصلے میں سپریم کورٹ نے کہا کہ آئینی عہدوں پر بیٹھے لوگوں کو احتیاط سے بیان دینا چاہئے. کورٹ کو سیاسی تنازعہ میں گھسیٹنا غلط ہے. راہل گاندھی نے معافی مانگ لی تھی. ہم نے معافی کو منظور کر لیا ہے۔

راہل گاندھی نے اپنے بیان ‘چوکیدار چور ہے میں کورٹ کا بھی ذکر کیا تھا. ان کے اس بیان پر بی جے پی رہنما میناکشی لیکھی نے سپریم کورٹ میں توہین عرضی داخل کی تھی. اس درخواست پر سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے کہا کہ راہل گاندھی نے بیان جان بوجھ کر بار بار دیا تھا. اپنے بیان کے لئے راہل گاندھی نے معافی مانگ لی تھی.راہل گاندھی کی معافی کو منظور کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے کہا کہ مستقبل میں اس طرح کے معاملات میں لوگ زیادہ محتاط رہیں۔

کیا ہے پورا معاملہ

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کے خلاف دائر فوجداری توہین درخواست پر سپریم کورٹ نے فیصلہ سنایا. یہ پٹیشن بی جے پی لیڈر میناکشی لیکھی نے دائر کی تھی، جس الزام لگایا گیا ہے کہ راہل گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی پر نشانہ لگانے کے لئے رافیل ڈیل معاملے پر سپریم کورٹ کے فیصلے کو توڑمروڑ کر پیش کیا اور اس سے کورٹ کی توہین ہوئی ہے. اس درخواست پر سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے راہل گاندھی کی معافی کو منظور کرتے ہوئے توہین کیس نہ چلانے کا حکم دیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *