rahul-gandhi

نئی دہلی:رافیل ڈیل کو لے کر مسلسل مودی حکومت سوالوں کے گھیرے میں ہے، پارلیمنٹ سے لے کر سڑک تک رافیل کو لے کر مودی حکومت کو اپوزیشن نے جم کر گھیرا۔ اپوزیشن کی طرف سے ایک کے بعد ایک نئے انکشافات ہوتے رہے، اس کے بعد دی ہندو میں ایک انویسٹگیٹو رپورٹ شائع ہوئی،جس کے بعد کانگریس پھر حملہ آور ہو گئی۔ کچھ دن بعد پلوامہ اٹیک ہوا جس کے بعد یہ معاملہ کچھ ٹھنڈا پڑتا دیکھئے، لیکن اس کے بعد دی ہندو کی ایک رپورٹ اور آئی جس میں ہوائی جہاز کے قیمت بڑھنے کو لے کر رپورٹ پیش کی گئی تھی۔ اس کے اگلے ہی دن سپریم کورٹ میں حکومت کی طرف سے پیش اٹارنی جنرل نے کہا کہ رافیل سے منسلک جو دستاویزات کورٹ کے سامنے پیش کرنے تھے،وہ وزارت سے چوری ہو گئے ہیں اور یہ ایک حساس مسئلہ بنا، جس پر اپوزیشن کو مودی حکومت کو گھیرنے کا ایک اور موقع مل گیا۔


اسی لحاظ سے جمعرات کی صبح قریب 9:30 بجے کانگریس صدر راہل گاندھی نے پریس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ رافیل میں بڑا گھوٹالہ ہوا ہے، تو دستاویز غائب ہوئے ہیں، دستاویزات غائب ہونے کا مطلب صاف ہے کہ کچھ بڑا گڑبڑ ہوا ہے۔ راہل نے کہا رافیل سے منسلک دستاویزات غائب ہوئے مطلب اپوزیشن کے الزام سچے ہیں اور اب مودی حکومت اس سچ کو چھپانے چاہ رہی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here