پنجاب میں جیت رہے تھے ہم، ای وی ایم کی جانچ ہونی چاہئے: کیجریوال

Share Article

Arvind-Kejriwalدہلی: دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے پریس کانفرنس کر کے پنجاب کے انتخابی نتائج پر سوال اٹھائے ہیں۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ کہیں پنجاب میں ای وی ایم کے ذریعہ عام آدمی پارٹی کے ووٹ بی جے پی اکالی اتحاد کے کھاتے میںت و نہیں چلے گئے جس کا فائدہ کانگریس کو ہوا اور وہ انتخاب جیت گئی۔

مالوا میں عام آدمی پارٹی کو پڑے ووٹوں پر انھوں نے کہا کہ پارٹی کے کارکنان کا کہنا ہے کہ انھوں نے ‘آپ’ کہ ووٹ دیا لیکن نتائج میں ان کے ووٹ بھی دیگر پارٹیوں کے کھاتے میں چلے گئے۔ انھوں نے سوال اٹھایا کہ کہیں ای وی ایم کے ذریعہ کہیں عام آدمی پارٹی کا 25 فیصد ووٹ اکالی اور بی جے پی کو تو ٹرانسفر نہیں کر دیا گیا۔ اروند کیجریوال نے کہا کہ اتر پردیش کے انتخابات سے بھی ای وی ایم کی فنکشنگ پر سوال اٹھ رہے ہیں۔ کچھ نہ کچھ تو گڑبڑ ہے۔ الیکشن کمیشن کی ساکھ پر بھی سوال ہے۔ ایسی صورت میں جمہوریت خطرے میں پڑ جائے گی۔ لوگوں کا انتخابی نظام سے بھروسہ اٹھنا خطرناک ثابت ہوگا۔ ای وی ایم اور اس سے نکلنے والی پرچیوں کا میچ ہونا لوگوں کا بھروسہ بڑھائے گا۔

کیجریوال نے کہا کہ میرے سوال اٹھانے کے بعد میڈیا میرا مذاق اڑا سکتا ہے لیکن ایسی باتیں سپریم کورٹ نے بھی کہی ہیں۔ دنیا کے کئی ترقی پذیر ممالک سے ای وی ایم پر پابندی عائد کی جا رہی ہیں۔ ایسی صورت میں ان پر سوال اٹھنے لازمی ہیں۔ بی جے پی نے بھی اقتدار میں نہ رہنے پر اس کی مخالفت کی تھی اور اب ان کے لئے سب کچھ صحیح ہو گیا۔ لال کرشن اڈوانی اور سبرامنیم سوامی جیسے  بی جے پی لیڈروں نے بھی اس پر سوال اٹھایا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *