پلوامہ حملہ: پاکستانی پی ایم عمران خان نے خاموشی توڑی، کہا:’ ثبوت دے بھارت ہوگی کارروائی‘

Share Article
pakisatan-pm-imran-khan

اسلام آباد :جموں و کشمیر کے پلوامہ میں ہوئے دہشت گردانہ حملے پر خاموشی توڑتے ہوئے پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے ہندوستان کے لگائے گئے الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ہندوستان نے بغیر کسی ٹھوس ثبوت کے الزام لگائے ہیں۔پاکستانی وزیر اعظم نے پریس کانفرنس میں دھمکی بھرے لہجے میں کہا کہ اگر ہندوستان پاکستان پر حملہ کرتا ہے تو ہم اس کا جواب دینے میں پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ سب جانتے ہیں کہ جنگ شروع کرنا انسانوں کے ہاتھ میں ہے، لیکن اس کا انجام کیا ہوگا وہ صرف اوپر والاکی ہی جانتا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ میں حکومت ہند سے کہنا چاہتا ہوں کہ آپ کب تک پاکستان کو ذمہ دار بتاتے رہیں گے۔ ہم پاکستان میں اسٹیبلٹی چاہتے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ اگر ہندوستان پلوامہ حملے سے منسلک ثبوت پیش کرتا ہے تو پاکستان کی جانب سے کارروائی ضرور کی جائے گی۔ ہم پاکستان کی زمین دہشت گردانہ سرگرمیوں میں استعمال نہیں ہونے دیں گے۔

پلوامہ میں سی آر پی ایف پر ہوئیحملے کے بعد آج پہلی بار پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کا بیان آیا ہے۔ اس دوران عمران خان ہند۔پاک کے درمیان چل رہے تعطل کو بات چیت کے ذریعے حل کرنے کی بات کہتے نظر آئے۔
غور طلب ہے کہ 14 فروری کو جموں و کشمیر کے پلوامہ میں سی آر پی ایف کے قافلے پر ہوئے دہشت گردانہ حملہ میں40 سے زائد جوان شہید ہو گئے تھے اور درجنوں زخمی ہوئے تھے۔ دہشت گرد تنظیم جیش محمد حملے کی ذمہ داری لی تھی، جس کے بعد سیکورٹی فورسز نے بڑی کارروائی کرتے ہوئے 18 فروری کو حملے کے ماسٹر مائنڈ کامران کو پلوامہ کے پنگلینا میں مار گرایا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *