صدرجمہوریہ نے کٹھوعہ معاملے کوشرمناک بتایا

Share Article
ramnath-kovind
جموں وکشمیرکے کٹھوعہ میں 8سال کی بچی بچی کے ساتھ ریپ اوربعدمیں قتل کے واقعہ نے پورے ملک کوجھنجھور کررکھ دیاہے۔ملک کے اکثروبیشتر شہروں میں ہرکوئی اس واقعہ کی مذمت کررہے ہیں اورملزموں کوسخت سے سخت سزادینے کا مطالبہ کرر ہیں۔اس معاملے پرصدرجمہوریہ ہندرام ناتھ کووند نے بھی اپناغصہ اورافسوس کا اظہارکیاہے۔شری ماتا ویشنو دیوی یونیورسٹی کے چھٹے جلسہ تقسیم اسناد سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے صدررام ناتھ کووندنے کھٹوعہ معاملے پرکہاہے کہ کہیں بھی ، کسی بھی ریاست میں یہ واقعہ رونما نہ ہو۔ہم سوچیں ایساسماج کیسے بن رہاہے۔ بچیوں وخواتین کے تحفظ ریاست کی اہم ذمہ داری ہے۔صدرنے کہاکہ ملک کے کسی نہ کسی کونے میں کہیں نہ کہیں ہمارے بچے سخت جرائم کا شکارہورہے ہیں۔حال ہی میں ایک معصوم بچی ایسی بربرتا اوربہیمانہ قتل کا شکارہوئی ہے جس کی امیدبھی نہیں کی جاسکتی ہے۔ صدر نے کہا کہ ملک کو آزاد ہوئے 70 برس ہوگئے ہیں۔ لیکن آج بھی اس طرح کے واقعات کا رونما ہونا شرمناک بات ہے۔ ہم سبھی کو سوچنا ہوگا کہ ہم کہاں جا رہے ہیں؟ ہم کیسا سماج بنا رہے ہیں؟ ہم اپنی آنے والی نسل کو کیا دے رہے ہیں؟ کیا ہم ایک ایسے سماج کی تعمیر کررہے ہیں جس میں ہماری ماؤں، بہنوں اور بیٹیوں کو انصاف اور تحفظ کا احساس ملے؟۔ صدر جمہوریہ نے کہا کہ ایسے واقعات کو روکنا ملک کے ذی حس شہریوں کا اخلاقی فرض ہے۔انہو ں نے کہاکہ میں سمجھتاہوں کہ دنیامیں سب سے خوبصورت چیزہے، معصوم بچوں کی مسکان اورسماج کی سب سے بڑی کامیابی ہے، ہمارے بچوں کاتحفظ ہونا۔ہربچے کوتحفظ دینا اوراسے محفوظ محسوس کرانا کسی بھی سماج کی پہلی ذمہ داری ہوتی ہے۔
صدرنے کہاکہ دولت مشترکہ کھیلوں میں ہندوستان کی جانب سے سب سے زیادہ میڈل ایک بیٹی نے ہی حاصل کئے ہیں۔دہلی کی مانکابترانے دوگولڈ میڈل سمیت کل چارمیڈل جیت کرملک کے شان کوبڑھایاہے۔ملک کے کونے کونے میں اپنے کھیل کونکھارنے والی بیٹیوں نے گول تمغے جیتے ہیں۔منی پورسے میریکام، میربائی چانو، سنجیتا چانو، ہریانہ سے منوبھاکر، ونیش پھوگاٹ، تلنگانہ سے سائنانہوال، کرناٹک سے اشونی پونپّا، مہاراشٹرسے تیجسونی ساونت، پنجاب سے حناسدھو نے میڈل جیتے ہیں۔بہارسے شریسی سنگھ اوریوپی سے پونم یادو بیٹوں نے ملک کا نام روشن اورہمارے سرکواونچا کیاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *