صدر رام ناتھ کووند نے نربھیا ریپ-قتل کیس کے قصورواروں کی رحم کی درخواست مسترد کی

Share Article

 

نئی دہلی، نربھیا ریپ-قتل کیس کے قصورواروں کی رحم کی درخواست پیر کو صدر رام ناتھ کووند نے مسترد کر دی۔ اب چاروں کو تہاڑ جیل میں ہی 16 دسمبر کی صبح 5 بجے پھانسی دی جائے گی۔2012میں دسمبر کی یہ وہی تاریخ ہے جس دن ان چاروں درندوں نے نربھیا کے ساتھ عصمت دری کی تھی ۔

دہلی کے مشہور نربھیا عصمت دری -قتل کیس کے ا قصورواروں کو سپریم کورٹ سے سزا سنائی جا چکی ہے۔ وزارت داخلہ نے جمعہ کو نربھیا عصمت دری کیس کے مجرم ونے شرما کی رحم کی درخواست کی فائل صدر کے سامنے بھیج کر رحم کی درخواست کو مسترد کرنے کی بھی سفارش کی تھی۔ اس کے بعد ونے و شرما نے وزارت داخلہ کی طرف صدر کو بھیجی گئی اپنی رحم کی درخواست واپس لینے کی خواہش ظاہر کی تھی۔ اس کا دعویٰ ہے کہ وزارت داخلہ کی طرف سے صدر کو بھیجی گئی رحم کی درخواست کی فائل پر اس کے دستخط نہیں ہیں۔ آج صدر نے یہ رحم کی درخواست مستردکرکے چاروں قصورواروں کی پھانسی پر مہر لگا دی۔اس لئے اب نربھیا عصمت دری کے قصورواروں کو 16 دسمبر کی صبح 5 بجے پھانسی دی جائے گی۔

غور طلب ہے کہ نربھیا اجتماعی عصمت دری کا واقعہ 16 دسمبر 2012 کوپیش آیا تھا۔زخموں کی وجہ سے بعد میں اس کی موت ہو گئی تھی۔ اس واقعہ کے بعد پورے ملک میں وسیع پیمانے پر احتجاج ہوا تھا۔نربھیا معاملہ میں رحم کی درخواست مسترد کئے جانے کا قدم ایسے وقت میں اٹھایا گیا ہے جب حیدرآباد میں 25 سالہ ایک ڈاکٹر سے اجتماعی عصمت دری اور قتل کو لے کر ملک بھرمیں غصہ ہے۔ اس کیس کے ملزمان کو تصادم میں ماردئے جانے کے بعد پورے ملک میں ریپ کے معاملات میں سخت قانون اور سزا کو لے کر مانگ ہو رہی ہے۔ پارلیمنٹ میں بھی یہ معاملہ زور شور سے اٹھایا جارہاہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *