اے ایم یو میں طالب علم نے کی خود کشی، ہنگامہ کے بعد پولس نے 7 طلبا کو کیا نامزد

Share Article

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی گذشتہ روز ایم ایس ڈبلو کے طالب علم محمد انس شمسی کے ذریعہ آفتاب ہال کے ممتاز ہاسٹل کے کمرہ نمبر 22 میں پنکھے سے لکٹ کر خود کشی کرنے کے بعد ہوئے ہنگامہ حالات میں آج دوسرے دن کیمپس میں امن قائم رہا۔ گذشتہ روز طالب علم کی موت کے بعد یونیورسٹی پراکٹر اور دیگر عملہ کے دو گھنٹہ کی تاخیر سے پہنچے پر طلبائ￿ میں اشتعال بڑھتا گیا تھا اور دیکھتے ہی دیکھتے طلبائ￿ مشتعل ہوگئے اور نعرے بازی کرنے لگے۔ اسی درمیان ہنگامہ آرائی میں ایس پی سٹی کی گاڑی پر پتھراؤ کرنے کی بات بھی کہی جارہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں گذشتہ روز طالب علم کی خود کشی کے معاملہ میں ہوئی ہنگامہ آرائی میں ایس پی سٹی کی گاڑی پر پتھراؤ اور توڑپھوڑ کے سلسلہ میں پولس نے 7 طلبائ￿ کو نامزد کرتے ہوئے 150 نامعلوم افراد کے خلاف تھانہ سول لائن میں مقدمہ درج کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق چوکی انچارج اْمیش کمار کی شکائت پر جن 7 طلبائ￿ کو نامزد کیا گیا ہے۔ ان میں محمد عمرفاروق، طالب، کامران، سلمان، فرحان،عمران اور زوبیری سمیت 150 نامعلوم افراد کے خلاف تھانہ سول لائن میں مقدمہ نمبر 588 کے تحت دفعہ 147,342,504,427,336,352,353 اور 332 میں مقدمہ قائم کیا گیا ہے۔سرکل آفیسرانل سمانیاں نے بتایا کہ طالب علم انس شمسی نے خودکشی کی ہے۔

اطلاع پرپہنچی پولس پر طلبائ￿ نے پتھراؤ کیا اور نعرے بازی کی۔ سرکاری کام میں رکاوٹ ڈالی گئی۔ اس لئے تھانہ سول لائن میں مذکورہ بالا دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ تحقیقات جاری ہے،بعد تحقیقات گرفتاری عمل میں لائی جائے گی، حفاظتی نقطہ نظر سے ایک کمپنی آر اے ایف اور ڈیڑھ سیکشن پی اے سی اور سول پولس لگائی گئی ہے۔ فی الحال حالات قابو میں ہیں۔ انھوں نے مذیدبتایا کہ آج صبح طالب علم کا پوسٹ مارٹم کرانے کے بعد اسکی لاش کو اسکے آبائی وطن پیلی بھیت علی گڑھ پولس کی نگرانی میں روانہ کردیا گیا۔

یونیورسٹی کے افسرر ابطہ عامہ عمر سلیم پیرزادہ نے کہا کہ انتہائی افسوس کی بات ہے کہ ایک بچہ ہمارے درمیان نہیں رہا یونیورسٹی انتظامیہ نے گہرے رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے اہل خانہ کے ساتھ اظہارِ ہمدردی کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس دکھ کی گھڑی میں کچھ طلباکے ذریعہ ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کی گئی جس کی تحقیقات جار ی ہے جو بھی قصور وار پایا گیا اسکے خلاف ضابطہ کے تحت کاروائی عمل میں لائی جائے گی،انھوں نے بتایا کہ آج مرحوم طالب علم کے لئے وائس چانسلر اور دیگر انتظامیہ کے ذمہ داران کے ساتھ اساتذہ اور طلبائ￿ نے دو منٹ کی خاموشی اختیار کرکے مرحوم طالب علم سے خراج عقیدت پیش کیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *