جھپٹ ماری کے بعد پولیس دو تھانوں کے سرحدی تنازعے میں کو الجھی رہی

Share Article

 

دارالحکومت میں جھپٹ ماروں کی سر گرمیاںتھمنے کا نام نہیں لے رہی ہیں۔ تازہ معاملہ شمال مغربی ضلع کے نیتا جی سبھاش پیلس علاقے کا ہے۔ یہاں ایک جوڑے سے موٹر سائیکل سوار بدمعاش بیگ چھین کر فرار ہو گیا۔ متاثرہ نے معاملے کی اطلاع پولیس کو دی۔ تھانہ پولیس نے اپنا دائرہ اختیار نہ ہونے کا حوالہ دے کر انہیں دوسرے تھانے میں جانے کو کہہ دیا۔متاثرہ مذکورہ تھانے میں گئے تو وہاں کی پولیس بھی ادھر ادھر کی باتیں کرنے لگی۔ بالآخر سینئر حکام کے نوٹس میں آنے کے بعد پولیس نے کیس درج کیا۔ فی الحال پولیس معاملے کی تحقیقات کر رہی ہیں۔

پیتم پوراہائشی شیام لال کا ذاتی کاروبار ہے۔ پولیس کو دی شکایت میں انہوں نے بتایا کہ کل شام وہ بیوی کے ساتھ آشیانہ چوک سے کوہاٹ انکلیو جا رہے تھے۔اسی درمیان پیچھے سے موٹر سائیکل سوار بدمعاش آیا اور ان کی بیوی کے ہاتھ سے بیگ چھین کر فرار ہو گیا۔ بیگ میں تین ہزار روپے، تین اے ٹی ایم کارڈ اور موبائل فون تھا۔متاثرہ نے سب سے پہلے اپنے بیٹے کو فون کرکے واقعہ کی معلومات دی اور بتایا کہ فون کمپنی سے رابطہ کر کے موبائل ٹریک کروائے۔ اسی درمیان متاثرہ کے بیٹے کے پاس چوری والے فون سے کال آیا کہ فون اور بیگ پیتم پورا میٹرو اسٹیشن کے قریب ہے۔

متاثرہ جوڑے پیتم پوا پہنچے اور بیگ چیک کیا۔ بیگ میں موبائل فون تھا، لیکن دیگر اشیاء چوری تھی۔ متاثرہ نے فورا موریہ انکلیو تھانے میں رابطہ کیا تو تھانے والوں نے اپنا دائرہ اختیار نہ ہونے کی بات کہہ کر انہیں نیتا جی سبھاش پیلس تھانے کے بارے میں بتایا۔ متاثرہ نیتا جی سبھاش پیلس تھانے گئے۔ اسی درمیان ان کے موبائل پر دو میسج آئے کہ ان کے اکاؤنٹ سے 20 ہزار روپے نکلے ہے۔ فی الحال پولیس شکار کے بیان پر مقدمہ درج کر معاملے کی تحقیقات کر رہی ہیں۔ ساتھ ہی آس پاس لگے سی سی ٹی وی فوٹیج کو کھنگال کر بدمعاش کی شناخت کرنے میں لگی ہوئی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *