مہاراشٹرمیں آج سے پلاسٹک پر بین 

Share Article
plastic
مہاراشٹر میں ایک بار استعمال کی گئی پلاسٹک کے پھینکنے پر پابندی لگائی جارہی ہے یہ پابندی 23 جون کی نصف شب سے نافذ ہوجائے گی۔ اس کے لیے ممبئی میں زور دارتیاری کی جارہی ہے۔ ممنوعہ پلاسٹک کے ساتھ پائے جانے والوں پر کارروائی کرنے کے لیے 250 انسپکٹروں کا خصوصی دستہ تشکیل دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ متبادل سامان کے لیے نمائش بھی لگائی گئی ہے۔
ورلی کے این سی سی آئی میں لگائی گئی نمائش کے ذریعہ بی ایم سی نے یہ بتانے کی کوشش کی ہے کہ پلاسٹک کے بغیر بھی زندگی گزاری جاسکتی ہے۔ نمائش کے افتتاح کے لیے لیڈروں کے ساتھ ساتھ فلم اسٹار اجے دیو گن اورکاجول کو بھی بلایا گیا تھا۔ اجے دیوگن نے جہاں لوگوں سے پلاسٹک سے آزادی کی اس مہم سے جڑنے کی اپیل کی ، وہیں کاجو ل نے بھی آنے والی نسل کے لیے بینک بیلنس اور مکان کے ساتھ ساتھ ایک بہتر دنیا دینے کی اپیل کی۔
تقریباً 100 اسٹالوں میں کاغذ کے خوبصورت منڈپ، کپڑوں کی طرح طرح کی تھیلی سے لے کر سپاری کی پلیٹ، چمچ، گلاس اور ڈبوں کے ساتھ کاغذ کے اسٹرا تک دستیاب ہیں۔ ایک چمچ تو ایسا بھی تھا جس سے کھانا کھانے کے بعد اسے بھی کھایا جاسکتا ہے۔ اناج سے بنے یہ چمچ سادے اور چاکلیٹ جیسے الگ الگ ذائقے میں دستیاب ہیں۔
پلاسٹک پر پابندی کی بات سن کر سب سے پہلے سوال یہ اٹھتا ہے کہ بارش میں کیسے کام چلے گا؟ اس بارے میں بایو گرین کے سی ای او محمد صادق نے بتایا کہ پھل اور سبزیوں کے اسٹارچ سے بنی تھیلیاں واٹرپروف اور ماحولیات کے مطابق بھی ہیں لیکن اس کے بعد بھی کچھ ایسے سوال ہیں جن کے جواب ابھی ملنے باقی ہیں، مثال کے طور پر سیال کے خوردہ فروش کیا کریں؟
شیو سینا لیڈر آدتیہ ٹھاکرے نے کہا ہے کہ 23 جون سے پابندی ہر حال میں لاگو ہوگی۔ اس کے لیے بی ایم سی نے جو 250 انسپکٹروں کا خصوصی دستہ بنایا ہے، وہ پلاسٹک کے ساتھ پائے جانے والوں کے خلاف کارروائی کرے گا۔ اس معاملے میں پہلی بار پکڑے جانے پر 5000 روپے،دوسری بار 10 ہزار ر وپے اور تیسری بار پکڑے جانے پر 25000 روپے کا جرمانہ اور تین ماہ کی سزا کا پروویژن ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *