پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے ہفتہ کے روز ایک بار پھر پاک مقبوضہ کشمیر کے باشندوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ بھارتی کشمیر کے لوگوں کی جدوجہد کو حمایت دینے کے لئے کنٹرول لائن کو پار نہ کریں ورنہ ہندوستان کو حملہ کرنے کا بہانہ ملے گا۔
وزیر اعظم عمران خان نے ٹویٹ کر کہا کہ وہ کشمیر کے لوگوں کے درد کو سمجھتے ہیں جو بھارت کے ان کشمیریوں کو حمایت دینا چاہتے ہیں جو گزشتہ دو ماہ سے زیادہ وقت سے غیر انسانی کرفیو کا درد جھیل رہے ہیں۔ انہوں نے لکھا کہ پاک مقبوضہ کشمیر کے لوگوں نے بھارتی کشمیریوں کو حمایت یا انسانی مدد کے لئے کنٹرول لائن پار کی، تو وہ بھارت کی کہانی میں الجھ جائے گا۔ عمران نے کہا ہے کہ اگر کشمیریوں کی مدد کرنے کے لئے پاکستان کی طرف سے کوئی بھی کنٹرول لائن پار کرتا ہے تو بھارت دنیا کے سامنے اسے پاکستان اسپانسر اسلامی دہشت گردی قرار دے گا اور اسے پاکستان پر حملہ کرنے کا بہانہ مل جائے گا۔
قابل ذکر ہے کہ پاکستانی فوج کنٹرول لائن پر مسلسل فائرنگ کر رہا ہے اور دہشت گردوں اور دراندازوں کا دفاع بھی کر رہا ہے لیکن بھارت کی مستعدی کی وجہ سے درانداز سرحدپار کرنے میں ناکام ہو رہے ہیں۔ جن دہشت گردوں نے پاکستان مقبوضہ کشمیر کی جانب سے بھارت کے اندر داخل ہونے کی کوشش کی، انہیں ہندوستانی فوج نے جوابی کارروائی میں مار گرایا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here