Paytm کو 4217 کروڑ کا بڑا نقصان، آمدنی اٹھنی تو خرچ روپیہ

Share Article
Paytm has a huge loss of 4217 crores, income is less then expenses

 

محصولاتی بنیاد پر کمپنی کو 4،217 کروڑ روپے کا خالص نقصان ہوا ہے۔ اس میں پے ٹی ایم منی، پے ٹی ایم فنانشل سروسز، پے ٹی ایم انٹرٹینمنٹ سروسز وغیرہ کے کاروبار شامل ہیں۔

ڈیجیٹل ادائیگی ورلڈ وشال Paytm کی پیرنٹ کمپنی ون 97 کمیونی کیشنز کو 31 مارچ کو ختم گزشتہ مالی سال میں بھاری نقصان ہوا ہے۔ محصولاتی بنیاد پر کمپنی کو 4،217 کروڑ روپے کا خالص نقصان ہوا ہے۔ اس میں پے ٹی ایم منی، پے ٹی ایم فنانشل سروسز، پے ٹی ایم انٹرٹینمنٹ سروسز وغیرہ کے کاروبار شامل ہیں۔

کمپنی کی سالانہ رپورٹ کے مطابق اس کے ایک سال پہلے اس 1،604.34 کروڑ روپے کا نقصان ہوا تھا۔ یعنی ایک سال کے اندر اندر کمپنی کا خسارہ بڑھ کر دوگنا سے زیادہ تک پہنچ گئی۔ گزشتہ مالی سال میں ون 97 کمیونی کیشنز کو اکیلے 3،959.6 کروڑ روپے کا نقصان ہوا ہے جبکہ اس کے ایک سال پہلے کمپنی کو صرف 1،490 کروڑ روپے کا نقصان ہوا تھا۔

آمدنی بڑھی، لیکن خرچ بھی بہت زیادہ بڑھا
اس دوران کمپنی کی کل آمدنی 8.2 فیصد بڑھ کر 3،579.67 کروڑ روپے تک پہنچ گئی۔ دوسری طرف، کمپنی کے خرچ دوگنا ہوکر 7،730.14 کروڑ روپے تک پہنچ گیا۔

کمپنی نے اپنی سالانہ رپورٹ میں کہا ہے، ‘برینڈ تیار کرنے اور کاروباری سرگرمی مضبوط کرنے کے لئے کمپنی کو بھاری سرمایہ خرچ کرنا پڑا ہے۔ بہت سرمایہ اور عمل آوری کے اخراجات کے لئے ہمیں بڑی رقم لگانی پڑی جس کی وجہ سے مالی سال کے دوران نقصان ہوا ہے۔

غور طلب ہے کہ ون97 کمیونی کیشنز میں پے ٹی ایم کے بانی اور منیجنگ ڈائریکٹر وجے شیکھر شرما کی حصہ داری 15.7 فیصد ہے۔ شرما نے کہا کہ بھاری خسارے کے باوجود کمپنی اگلے دو سال میں مارکیٹ سے سرمایہ ریزنگ کے لئے آئی پی او بنانے پر غور کر رہی ہے۔

کمپنی کو سال 2018 میں امریکی سرمایہ کاری کمپنی برکشائر ہیتھ وے سے 30 کروڑ ڈالر کی سرمایہ ملی تھی۔ اس میں سافٹ بینک اور علی بابا جیسی غیر ملکی کمپنیوں نے بھی سرمایہ کاری کی ہے۔

پے ٹی ایم نے رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں 1.2 ارب سے زیادہ تاجر لین دین درج کیا ہے۔ اس کے علاوہ پے ٹی ایم کا دعوی ہے کہ پی 2 پی اور پیسے کی منتقلی لین دین کے بوتے آف لائن ادائیگی میں اس نے ملک میں قائدانہ حیثیت برقرار رکھی ہے۔ ون97 کمیونی کیشنز لمیٹڈ۔ کی ملکیت پے ٹی ایم کو قریب 1.4 کروڑ ریٹیل اسٹورز پر قبول کیا جاتا ہے اور اس علاقے میں کمپنی کے مارکیٹ شیئر 70 فیصد ہے۔
کمپنی نے اس سال اعلان کیا تھا کہ وہ اب اپنی توجہ پيئير ٹو پيئير (پی 2 پی) لین دین سے ہٹا کر گروسری اسٹوروں، ریستورانوں، كميوٹ اور دیگر روز مرہ چارجز میں ڈیجیٹل ادائیگی کے استعمال کو فروغ دینے پر مرکوز کر رہی ہے۔

پے ٹی ایم نے کہا کہ اس نے اس کے علاوہ یوزرس کو QR کوڈ کو اسکین کرنا سکھانے کے لئے ایک بڑا مہم شروع کی ہے، تاکہ وہ گروسری اسٹورز پر پے ٹی ایم ایپ سے فوری طور پر ادا کر سکیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *