وطن پرستوں نے عظیم کریکیٹر سنیل گواسکر اور سچن تندولکر کا کر دیا یہ حال

Share Article

 

پلوامہ حملے کے بعد ملک میں غم و غصہ کا ماحول ہے۔ اس دوران اب اس بات پر بحث تیز ہو گئی ہے کہ کیا عالمی کپ میں ہندوستان کو پاکستان کے ساتھ میچ کھیلنا چاہیے نہیں۔ سوشل میڈیا میں لوگ اپنی اپنی طرح سے اس مسئلے پر رائے دے رہے ہیں۔

 

نئی دہلی: دنیا بھر میں ہندوستان کا نام روشن کرنے والے کرکٹر سچن تندولکر اور لٹل ماسٹر سنیل گواسکر کے بیان کے بعد اب ملک بھر میں اس بات پر بحث ہو رہی ہے کہ کیا عالمی کپ میں ہندوستان کو پاکستان کے ساتھ میچ کھیلنا چاہیے کہ نہیں۔ سوشل میڈیا میں لوگ رائے دے رہے ہیں۔

 

Image result for india pakistan match

سوشل میڈیا میں لوگوں کے جوابات
امن پانڈے نام کے سوشل میڈیا یوزر لکھتے ہیں، “کچھ لوگ کہہ رہے ہیں کہ عالمی کپ میں ہندوستان -پاکستان میچ نہیں ہونا چاہئے۔ ان کے درمیان میچ نہ کھیلنے سے کیا وہ لوگ پاکستان میں رہنا چھوڑ دیں گے؟ جیوتی کمار نام کی سوشل میڈیا یوزر لکھتی ہیں کہ، “اور خوب پیسے کماؤ۔ ایک لاکھ پینتیس ہزار روپے کا ٹکٹ فروخت ہو رہا ہے ہندوستان-پاکستان میچ۔ ہندوساتن پاکستان کے درمیان کوئی میچ نہیں ہونا چاہئے۔

 

حیدر علی ہاشمی نام کے یوزر لکھتے ہیں کہ مجھ سے نفرت ہو گی اگر ورلڈ کپ میں پاکستان کے ساتھ بغیر میچ کھیلے ہی ان کو دو پوائنٹس دے دیے جائیں گے۔شیورامجي نام کے یوزر لکھتے ہیں کہ جب پاکستانی اداکاروں کو بیٹن کیا جا رہا ہے، سگرو پر پابندی لگ رہا ہے تو پھر کرکٹ کیوں صرف پیسوں کے لئے کرکٹ نہیں ہونا چاہئے۔

 

منوج اگروال نام یوزر لکھتے ہیں کہ اگر سچ میں ہمارے کھلاڑی ملک سے محبت کرتے ہیں اور ان کے لئے اگر وطن پرستی ہے تو ان کو خود پاکستان کے خلاف کھیلنے سے انکار کر دینا چاہئے۔ جب گاؤں کا کسان ٹماٹر پھینکنے کو تیار ہے پاکستان بھیجنے کے بجائے تو پھر ان کو اتنا تو کرنا ہی چاہئے۔

 

سچن تندولکر کو یوزرس نے آڑے ہاتھوں لے لیا۔ سچن نے پاکستان کے ساتھ عالمی کپ میں میچ کھیلنے کی بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے ہمیشہ ہی پاکستان کو عالمی کپ میں دھول چٹائی ہے اس بار بھی ہندوستان پاکستان کو شکست دے گا اور اگر ہندوستان پاکستان کے ساتھ میچ نہیں کھیلے گا تو ہندوستان کے دو پوائنٹس گھٹ جائیں گے اور اس کا فائدہ پاکستان کو ہوگا۔ بس پھر کیا تھا سوشل میڈیا میں سچن کو خوب برا بھلا کہا گیا سچن کی ٹویٹس پر جواب دیتے ہوئے اندراني نام کی یوزر نے لکھا کہ 44 جوانوں کی شہادت کو 2 پوائنٹ سے نہیں تولا جا سکتا۔ آج ہم اپنے گھروں میں محفوظ بیٹھے ہیں تو صرف آپ کی ہندوستانی فوج کی بدولت۔ اپنے بیٹے کو فوج میں بھیجو پھر تجھے شہادت کا احساس ہو جائے گا۔

 

دیویش شرما نام کے یوزر لکھتا ہے کہ اب ہندی میں لو بھائی، کوئی بھی مہذب انسان یہ نہیں چاہتا کہ ان کا بچہ سڑک کے بچوں کے ساتھ کھیلے اور پاکستان ایک گندی نالی کے کیڑے جیسا ملک ہے، اس کی یہ حیثیت نہیں کہ وہ مہذب ممالک کے ساتھ کھیل میں حصہ لے۔

 

اسی طرح کے جوابات سوشل میڈیا میں آ رہی ہے۔ ہندوستان اور پاکستان کا میچ 16 جون کو انگلینڈ کے مانچسٹر میدان پر کھیلا جائے گا۔ اس میچ کو لے کر کرکٹ پرستار کافی پرجوش تھے لیکن پلوامہ حملے کے بعد حالات بالکل بدل گئی ہیں۔ فی الحال سي او اے نے میٹنگ کر اب اس میں کوئی فیصلہ نہیں لیا ہے۔ بی سی سی آئی کی جانب سے بھی ابھی کوئی بیان نہیں آیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *