بہار میں’مہاگٹھ بندھن‘ پر چھایا بحران، سیٹوں کو لے کر پھنسا پنچ

Share Article

grand-alliance-may-break-in

لوک سبھا انتخابات کی تاریخوں کا اعلان ہو چکا ہے، لیکن بہار میں ’مہاگٹھ بندھن‘ پر بحران کے بادل منڈلا رہے ہیں۔ مہاگٹھ بندھن کے اتحادیوں کے درمیان سیٹوں کی تقسیم کو لے کر پنچ پھنستا نظر آ رہا ہے۔ سیٹوں کو لے کر آر جے ڈی اور کانگریس آمنے۔ سامنے ہیں۔

بہار میں جہاں کانگریس 11 سیٹوں کو لے کر بضد ہے تو وہیں آر جے ڈی کانگریس کو 8 سیٹوں سے زیادہ نہیں دینا چاہتی، ایسے میں آر جے ڈی اور کانگریس کے درمیان مچا گھمسان مہاگٹھ بندھن کے لئے اچھا اشارہ نہیں ہے۔ اندازہ ہے کہ اگر کانگریس کے ساتھ سیٹوں کو لے کر چل رہا تنازعہ جلد نہیں سلجھتا تو پیر کو آر جے ڈی باقی ساتھیوں جماعتوں کے ساتھ آگے بڑھنے کا اعلان کر سکتی ہے۔ تیجسوی یادو کا ایک ٹویٹ بھی اس کی طرف اشارہ کرتا نظر آ رہا ہے، جس میں انہوں نے اشاروں ہی اشاروں میں کانگریس اور اتحادیوں کو نصیحت دی تھی۔

جہاں ایک طرح بہار میں آر جے ڈی اور کانگریس درمیان سیٹ تقسیم کو لے کر کھینچاتانی چل رہی ہے تو وہیں اوپیندر کشواہا کی پارٹی راشٹریہ لوک سمتا پارٹی کو 3 سیٹ دیے جانے پر ہندوستانی عوام مورچہ کے صدر جتن رام مانجھی نے ناراضگی ظاہر کی ہے۔ ذرائع کے مطابق مانجھی نے راشٹریہ لوک سمتا پارٹی کو دی گئی سیٹوں پر اعتراض ظاہر کرتے ہوئے آر ایل ایس پی کے برابر سیٹوں کا مطالبہ کیا ہے، وہ نہیں چاہتے کہ سیٹ تقسیم میں ان کا حصہ آر ایل ایس پی سے کم ہو۔

غور طلب ہے کہ بہار میں کل 40 لوک سبھا سیٹوں پر7 مراحل میں انتخابات ہوں گے۔ بہار میں 11 اپریل، 18 اپریل، 23 اپریل، 29 اپریل، 6 مئی، 12 مئی اور 19 مئی کو ووٹنگ ہوگی۔ وہیں 23 مئی کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *