پارلے جی کا منافع 15 فیصد بڑھا

Share Article

 

. بسکٹ بنانے والی ملک کی بڑی کمپنی پارلے پروڈکٹس پرائیویٹ لمیٹڈ کے ملازمین کے لئے یہ راحت بھری خبر ہے۔ دو ماہ پہلے پارلے کے 10 ہزار ملازمین کے سر پر ملازمت جانے جیسے بحران کی تلوار لٹک رہی تھی۔ مگر ان دو ماہ میں اس کا منافع 15.2 فیصد بڑھا ہے۔ پارلے پروڈکٹس گروپ کی یونٹ پارلے بسکٹس کا کاروباری سال 2018-19 میں خالص منافع 15.2 فیصد بڑھا ہے۔ پارلے جی بسکٹس کا منافع بڑھنے کی خبر اس لئے زیادہ اہم ہے، کیونکہ نقصان کا خدشہ کے پیش نظر بسکٹ مینوفیکچررز نے جی ایس ٹی کونسل سے جی ایس ٹی کی شرح میں کمی کی مانگ کی تھی۔

بزنس پلیٹ فارم ٹافلر کے مطابق گزشتہ مالی سال 2018-19 میں پارلے جی بسکٹ کا خالص منافع 410 کروڑ روپے ہے جو کہ مالی سال 2017-18 میں 355 کروڑ روپے تھا۔ اس دوران کمپنی کی آمدنی میں 6.4 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ یہ بڑھ کر 9030 کروڑ روپے ہو گئی ہے۔ 2017-18 میں یہ تعداد 8780 کروڑ روپے تھی۔

اس پر بھارتیہ جنتا پارٹی نیشنل انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی انچارج امت مالویہ نے ٹویٹ کر کہا ہے کہ کچھ دن پہلے تک ’ایلاٹینڈ اکونامسٹ‘ ہمیں بتا رہے تھے کہ لوگ 5 روپے کا پارلے جی بسکٹ پیک کو نہیں خرید پا رہے ہیں۔ ویسے کمپنی کا منافع 15.2 فیصد بڑھا اور آمدنی 6.4 فیصد بڑھ کر 09030 کروڑ روپے ہو گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ اگست میں پارلے جی کے کیٹیگری ہیڈ مینک شاہ نے کہا تھا کہ عام آدمی کا بسکٹ پارلے اپنے بدترین دور سے گزر رہا ہے۔ اگر حکومت کمپنی کو جی ایس ٹی پر راحت نہیں دیتی ہے تو ہمیں 10 ہزار لوگوں کوملازمتسے نکالنا پڑے گا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *