محمود عباس سیاسی مقاصد کے لیے عدلیہ کو یرغمال بنانا چاہتے ہیں: حماس

Share Article

 

اسلامی تحریک مزاحمت ‘حماس’ کے سیاسی شعبے کے سینئر رکن ڈاکٹر موسیٰ ابو مرزوق نے الزام عاید کیا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمود عباس اپنے سیاسی مقاصد کے لیے عدلیہ کو اپنے یرغمال بنانا چاہتے ہیں۔مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق ابو مرزوق نے ایک بیان میں کہاکہ ججوں کی ریٹائرمنٹ کی مدت میں کمی اور جوڈیشل کونسل معاملات میں مداخلت صدر عباس کی طرف سیاسی مقاصد کے لیے عدلیہ کو استعمال کرنے کے مترادف ہے۔انہوں نے کہا کہ صدر عباس تنظیم آزادی فلسطین، فلسطینی اداروں، تحریک فتح کی مرکزی کمیٹی، انتظامیہ کو اپنے قبضے میں رکھنے کے ساتھ فلسطینی پارلیمنٹ کو بھی تحلیل کر چکے ہیں۔حماس رہ نما کا کہنا تھا کہ صدر محمود عباس آمرانہ طرز عمل پر چل رہے ہیں۔ وہ تمام ریاستی اداروں اور عدلیہ کو اپنے ہاتھوں میں یرغمال رکھنا چاہتے تاکہ ان کے انفرادی سطح پرکیے گئے فیصلوں کو عملی شکل دینے کی راہ ہموار کی جاسکے۔خیال رہے کہ حال ہی میں صدر محمود عباس نے ایک صدارتی فرمان کے تحت ججوں کی ریٹائرمنٹ کا عرصہ ان کی عمر کے 60 سال کے مطابق کر دیا ہے۔ دوسرے فرمان میں انہوںنے جوڈیشل کونسل تحلیل کر دی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *