فلطسین اور اسرائیل کے ساتھ بہتر رشتوں کے لئے وزیر اعظم مودی کا قابل ستائش قدم

Share Article

India-Foreignنئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی آخر کار جولائی میں پہلے اسرائیل دورے پر جائیں گے۔ اس کے ساتھ ہی اسرائیل کی وہ مراد بھی پوری ہو جائے گی جو سال 2014 میں اس نے اپنے دل میں رکھی تھی۔ وزیر اعظم بننے کے بعد مودی کا یہ پہلا اسرائیل کا دورہ ہوگا۔ خاص بات یہ ہے کہ وزیر اعظم مودی اس دورے میں فلسطین نہیں جائیں گے جیسا کہ باقی وزرائے اعظم نے ماضی مین کیا ہے۔
وزیر اعظم مودی کا یہ اسرائیلی دورہ اس لئے بھی اہم ہے کیونکہ سا ل 1992 کے بعد وہ پہلے ہندوستانی وزیر اعظم ہیں جو اسرائیل جا رہے ہیں۔ ہندوستان اور اسرائیل کے رشتے اپنے 25ویں سال میں ہے اور نومبر 2016 میں اسرائیل کے صدر ریووین رولین ہندوستان کا دورہ کر چکے ہیں، لیکن اگر آپ کو لگ رہا ہے کہ وزیر اعظم مودی اپنے اس دورے کی وجہ سے فلسطین کو نظر انداز کریں گے تو آپ غلط سوچ رہے ہیں۔ فلسطین کے صدر محمود عباس، پی ایم مودی اسرائل جانے سے پہلے ہندوستان آئیں گے۔ وزیر اعظم مودی کی ہی طرز پر وہ بھی پہلے ایسے فلسطینی صدر ہوں گے جو اپنے اس دورے میں پاکستان نہیں جائیں گے۔
وزیر اعظم مودی اور اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کئی موقعوں پر ایک دوسرے سے مل چکے تھے لیکن وزیر اعظم مودی اسرائیل کیوں نہیں جا رہے ہیں، اس پر کئی لوگوں نے سوال اٹھائے۔ کئی لوگوں نے کہا کہ پی ایم مودی ایسا کرنے سے اس لئے بچ رہے ہیں کیونکہ وہ ہندوستان میں اپنے ایک خاص ووٹ بینک کو مایوس نہیں کرنا چاہتے ہیں تو کئی لوگوں نے کہا کہ وزیر اعظم مودی الجھن میں ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *