اٹاری بارڈر سے پاکستانی ڈرون برآمد، ایک شخص حراست میں

Share Article

پنجاب پولیس نے گزشتہ دنوں گرفتار خالصتان زندہ باد فورس کے دہشت گردوں کی نشاندہی پر جمعہ کی صبح اٹاری بارڈر سے پاکستان کا ڈرون برآمد کیا ہے۔ اس سلسلے میں ایک شخص کو حراست میں لیا گیا ہے۔ اس ڈرون کو پنجاب پولیس کی کاؤنٹر انٹلی جینس ونگ اور کمانڈوں ونگ نے برآمد کیا ہے۔

پنجاب پولیس کو پتہ چلا ہے کہ سرحدی علاقوں میں پاکستان کے چار ڈرون اب بھی موجود ہیں۔ اس کے بعد سارے علاقے میں پولیس نے بی ایس ایف کی مدد سے تلاشی مہم شروع کی ہے۔ پنجاب پولیس کا کہنا ہے کہ پاکستان ڈرون کے ذریعے سرحد پار ہتھیار پہنچانے کی بڑی سازش کر رہا ہے۔ پاکستان سے چار اور ڈرون ہتھیار لے کر بھیجے گئے تھے۔ ان کو خالصتانی دہشت گردوں نے ترن تارن علاقے میں چھپا دیا ہے۔

ترن تارن کے چوہلا صاحب کے پاس چار دن پہلے گرفتار خالصتان زندہ باد فورس (کے زیڈ ایف) کے دہشت گردوں نے پولیس تفتیش میں کہا ہے کہ جھبال علاقے میں چار ڈرون ابھی اور ہیں۔ اس ان پٹ کے بعد کاؤنٹرانٹیلی جنس کی ٹیم نے صبح دہشت گردوں کے ساتھی آکاش دیپ کی مدد سے اٹاری علاقے میں سرچ آپریشن شروع کیا۔ ٹیم نے اٹاری سرحد سے ملحق گاؤں ماہوا کھیتوں سے ایک پاکستانی ڈرون برآمد کیا ہے۔ اس ڈرون کی تحقیقات کی جا رہی ہے۔ ادھر، سیکورٹی نظام کا جائزہ لینے کے لئے بی ایس ایف کے اعلی حکام نے ہنگامی میٹنگ بلا کر سرحد سے ملحق گاؤں میں تلاشی مہم تیز کر دی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *