پاکستان نے پھر یو این کے سامنے پھیلایاہاتھ، مانگی ہندوستان سے دوستی کی بھیک

Share Article
imran-khan
اسلام آباد: جموں و کشمیر کے پلوامہ میں ہوئے دہشت گردانہ حملے کے بعد ہندوستان کے ساتھ بڑھتی ’ کشیدگی ‘کو کم کرنے کے لئے پاکستان نے اقوام متحدہ سے فوری طور مداخلت کرنے کی اپیل کی ہے۔ پاکستانی وزارت خارجہ نے بتایا کہ ملک کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل ایتونیو گتاریس کو پیر کو خط بھیج کر دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کم کرنے میں ان کی مدد مانگی۔ قابل ذکر ہے کہ کشمیر کے پلوامہ ضلع میں 14 فروری کو ہوئے خودکش حملے میں فوج کے تقریباً 40 جوان شہید ہو گئے تھے، اس حملے کی ذمہ داری دہشت گرد تنظیم جیش محمد نے لی ہے۔ اس حملے کے بعد ہند – پاک کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے،دونوں نے اپنے اپنے ہائی کمشنروں کو واپس بلا لیا ہے۔
خود کو ڈرا ہوا دکھا کر پاکستان دنیا کو گمراہ کر رہا ہے
shah-mahmud-qureshi
قریشی نے اپنے خط میں لکھا، ’ میں ہندوستان کی طرف سے پاکستان کے خلاف طاقت کے استعمال کے خطرے کی وجہ سے ہمارے علاقے میں خراب ہو رہے حفاظتیحالات کی طرف آپ کومتوجہ کرتا ہوں۔‘ ہندوستان نے کشمیر معاملے پر کسی بھی تیسری پارٹی کی مداخلت کو مسترد کردیا ہے اور وہ کہتا آیا ہے کہ بھارت اور پاکستان کے تعلقات سے منسلک تمام معاملات کو فریقین کے طریقے سے حل کیا جانا چاہئے۔ قریشی نے اپنے خط میں کہا کہ ہندوستانی سی آر پی ایف جوانوں پر پلوامہ میں حملہ واضح طور پر ایک کشمیر رہائشی نے کیا تھا،یہاں تک کہ ہندوستان نے بھی یہی کہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تفتیشسے پہلے ہی اس حملے کے لئے پاکستان کو ذمہ دار ٹھہرانا بے تکی بات ہے۔ قریشی نے الزام لگایا کہ بھارت نے گھریلو سیاسی وجوہات سے پاکستان کے خلاف اپنا معاندانہ بیان بازی جان بوجھ کر بڑھا دی ہے اور ماحول میں کشیدگی پیدا کی ہے۔
عمران خان کے وزیر اعظم بننے سے پہلے اور بنتے ہی پاکستان نے کئی بار بھارت سے بات چیت کی اپیل کی تھی، یہاں تک کہ پاکستان نے اس وقت بھی اقوام متحدہ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا اور یہ دکھانے کی کوشش کی تھی کہ پاکستان بات چیت کی پہل کرنا چاہتا ہے لیکن بھارت تیار نہیں ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *