gulam-nabi
مرکزی وزیراننت ہیگڑی کے آئین والا بیان طول پکڑتاجارہاہے۔آج 27دسمبرکوراجیہ سبھا اورلوک سبھامیں بھی اپوزیشن نے ان کے بیان کولیکرجم کرہنگامہ ،اورکاررائی کوروکنے پرمجبورکیاگیا۔دراصل اننت ہیگڑے نے کہاتھاکہ جولوگ خودکوسیکولر اوردانشورمانتے ہیں،ان کی خودکی کوئی پہچان نہیں ہوتی ہے،وہ اپنی جڑوں سے انجام ہوتے ہیں۔برہمن یوواپریشدکی اجلاس میں ہیگڑے نے یہ بھی کہاتھاکہ بی جے پی آئین کوبدلنے کے لئے اقتدارمیں آئی ہے۔
راجیہ سبھامیں اپوزیشن کے لیڈرغلام نبی آزادنے کہاکہ اگرکسی شخص کوآئین پریقین نہیں ہے تواسے رکن پارلیمنٹ ہونے کا کوئی حق نہیں ہے۔کانگریس کے ممبران نے سوال کاوقت شروع ہوتے ہی آسن کے قریب آکرہیگڑے کے بیان کے مخالفت میں نعرے بازی شروع کردی۔حزب اختلاف وزیرکوبرخاست کرو کے نعرے لگارہے تھے۔آرجے ڈی کے جے پرکاش نارائن یادوبھی کانگریس ممبران کے ساتھ نعرے بازی میں شامل تھے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here