اپوزیشن لیڈر نے کمل ناتھ حکومت کو حمایت دے رہے ممبران اسمبلی کو دیا آفر

Share Article

مدھیہ پردیش میں کانگریس کی کمل ناتھ حکومت کی مصیبتیں کم ہونے کا نام نہیں لے رہی ہیں۔ وزراء اور ارکان اسمبلی کی طرف سے ایک دوسرے پر لگائے جا رہے الزام تراشیوں کے درمیان اب کانگریس ممبر اسمبلی بھی بی جے پی میں جانے کی باتیں کہنے لگے ہیں۔ آزاد امیدوار اور دیگر پارٹیوں کے ممبر اسمبلی بھی بی جے پی کی حمایت میں باتیں کہنے لگے ہیں۔ ایسے میں کمل ناتھ حکومت پر بحران بڑھنے لگا ہے۔ اسی درمیان بی جے پی کے سینئر لیڈر اور اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر گوپال بھارگو نے حکومت کو حمایت دے رہے آزاد اور دیگر جماعتوں کے ممبران اسمبلی کو بی جے پی میں شامل ہونے کا آفر دیا ہے۔

Image result for Opposition Leader Offers Offices To Members Assembly Supporting Kamal Nath Government
اپوزیشن لیڈر گوپال بھارگو نے جمعرات کے روز میڈیا سے بات چیت میں آزاد امیدوار، ایس پی اور بی ایس پی ممبران اسمبلی سے بی جے پی کے ساتھ آنے کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا کہ آپ لوگ بی جے پی کا تعاون کریں۔ آپ کو اچھی حکومت دیں گے۔ بی جے پی نے 15 سال تک اچھی حکومت چلائی ہے اور آگے بھی چلا کر دکھائے گی۔ گوپال بھارگوکے اس آفر پر برہان پور اسمبلی حلقہ سے آزاد ممبر اسمبلی سریندر سنگھ شیرا نے غور کرنے کی بات کہی ہے۔ انہوں نے میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ گوپال بھارگو قابل احترام رہنما ہیں۔ ان کے آفر پر غور کروں گا۔ اس معاملے میں کانگریس کی طرف سے ابھی کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا ہے، لیکن پارٹی میںہلچل کا ماحول دیکھنے کو مل رہا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ بدھ کے روز امباہ اسمبلی حلقہ سے کانگریس ممبر اسمبلی کملیش جاٹو اور گوہد سے کانگریس ممبر اسمبلی رنویر جاٹو نے وزیر صحت تلسی رام سلاوٹ پر منتقلی کو لے کر پیسے لینے کا الزام لگایا تھا۔ ساتھ ہی کہا تھا کہ اگر ایسا ہی چلتا رہا تو جلد ہی وہ استعفیٰ دے کر بی جے پی میں چلے جائیں گے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *