والدین کو اکیلا چھوڑکر امریکہ گیا بیٹا،مشتبہ حالت میں ملی لاشیں

Share Article

Elderly-couple-Dead-body

دہلی میں بڑھتا کرائم اور بزرگوں کا اکیلا پن لگاتار فکر کرنے کا ایک اہم مسئلہ بنا ہوا ہے۔دہلی کے پاش علاقہ میں ایک بزرگ جوڑے کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔جوڑے کا بیٹا امریکہ میں کام کرتا ہے۔پولیس کو ملی لاشوں کی خراب حالت کو دیکھتے ہوئے بتایا جا رہا ہے کہ دونوں کی موت کچھ دن پہلے ہوئی ہوگی۔پولیس نے فی الحال لاشوں کو اپنے قبضہ میں لے لیا ہے اور جانچ بھی شروع کردی ہے۔یہ معاملہ جنوبی دہلی کے کیلاش کالونی کا ہے۔
یہاں پاش سوسائٹی کے ایک فلیٹ میں 26جنوری کی شام ایک بزرگ جوڑے کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔مرنے والوں میں ایک وریندر کمار کھنیجا اور انکی بیوی سرلا کھنیجا ہیں وہ یہاں ماونٹ کیلاش سوسائٹی میں اکیلے رہتے تھے۔ان کے 2بیٹے تھے،جن میں سے ایک امریکہ میں رہتا ہے جبکہ دوسرے بیٹے کی تقریباًدیڑھ سال قبل وفات ہوگئی تھی۔بتایا جا رہا ہے کہ بیٹے کی وفات اور اکیلے پن کی وجہ سے دونوں ماں باپ پچھلے کافی وقت سے دماغی پریشانی سے گزر رہے تھے۔سوسائٹی کے لوگوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے انکو زیادہ تر گھر سے نکلتے ہوئے نہیں دیکھا۔پولیس نے بتایا کہ ان دونوں کی اپنے بیٹے سے 16جنوری کو آخری بار بات ہوئی تھی ۔اس کے بعد بیٹے نے کئی بار ان سے رابطہ کرنے کی کوشش کی لیکن بات نہیں ہو پائی۔

 

 

 

 

ہفتہ کی صبح اس نے اپنے ایک رشتے دار کی مدد سے پولیس سے رابطہ کیا۔پولیس جب فلیٹ پر پہنچی تو فلیٹ اندر سے بند تھا۔دروازہ توڑ کر اندر جانے پر جوڑے کی لاشیں برآمد ہوئی۔شروعاتی جانچ میں پولیس اس معاملہ کو خودکشی کا معاملہ مان کر جانچ کررہی ہے۔فی الحال دونوں لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا گیا ہے۔لیکن اس حادثہ نے ایک بار پھر یہ ثابت کردیا کہ کس طرح دہلی کے بزرگ اکیلے پن کا شکار ہورہے ہیں۔دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ بزرگوں کی دیکھ بھال کے لئے شہر کی پولیس نے کئی مؤثر قدم اٹھائے ہیں ،لیکن دہلی پولیس کے اس دعوے کو یہ حادثہ پوری طرح جھٹلاتا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *