کولکاتہ کی دو مساجد میں خواتین کیلئے نماز پڑھنے کا کیا گیاانتظام

Share Article

 

کولکاتہ کی دو مساجد میں خواتین کو بھی نماز اداکرنے کا انتظام کیا گیا ہے ۔ یہ دونوں مسجدیں ہیں، ناخدا اور ٹیپو سلطان ہیں۔ ٹیپو سلطان شاہی مسجد کے طور پر بیان کیا گیا ہے، جبکہ ناخدا مسجد کو جامع مسجد کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

 

مغل زمانے سے ہی کولکاتہ کی یہ دونوں مسجد یںاقلیتوں کے لئے مرکز رہی ہیں۔ بتایاجارہا ہے کہ بنگال امام ایسوسی ایشن کی جانب سے تحریری طور پر مطالبہ کئے جانے کے بعد مسجد کمیٹی نے خواتین کیلئے نماز پڑھنے کاانتظام کیا ہے اس کے لئے ساری تیاریاں کرلی گئی ہیں۔ ان دونوں مساجد میں خواتین کے لئے علیحدہ ہال ہوگا، جہاں وہ نماز ادا کر سکیں گی۔

 

اس کے علاوہ مسجد میں آنے جانے کے لئے الگ سے دروازہ ہوگا۔ ساتھ ہی الگ بیت الخلاء کا انتظام بھی کیا جائے گا۔ناخدا مسجد کے امام شفیق قاسمی نے بتایا کہ ہمیں اس سلسلے میں خط ملا ہے۔ انتظامیہ کمیٹی خواتین کے لئے بہتر انتظامات کرے گی۔ کئی خواتین مسجد میں نماز ادا کرنے آتی ہیں۔ خواتین ایک کونے میں بیٹھ کر نماز ادا کرتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسجد میں خواتین کے داخلے کے لئے تین میں سے ایک دروازے کو خاص کیا جائے گا۔ ان بیٹھنے کے لئے جگہ بھی مخصوص ہوگی۔اس کے ساتھ ساتھ دیگر بنیادی سہولیات بھی یقینی بنائی جائیں گی۔قابل ذکر ہے کہ ٹیپو سلطان مسجد کو سال 1842 میں شاہ غلام محمد نے بنوایا تھا۔ وہ ٹیپو سلطان کے سب سے چھوٹے بیٹے تھے۔ ناخدا مسجد بننے کا آغاز سال 1926 میں ہوا تھی۔ ان دونوں مساجد میں نماز ادا کرنے سے متعلق خط میں امام ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ کئی بار غیر ملکی خواتین کولکاتہ آتی ہیں۔ شریعت کے مطابق ان نماز ادا کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ لہٰذا مساجد میں علیحدہ ہال اور نماز والی جگہ پر پردہ لگایا جائے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *