واٹس ایپ پر بھیجی جاتی تھیں کال گرلس کی فحش تصاویر، جنسی ریکیٹ کا پردہ فاش

Share Article

پٹنہ۔ بہار کے دارالحکومت پٹنہ میں هائی پروفائل جنسی ریکیٹ کے دھندے کا پولیس نے پردہ فاش کیا ہے۔ چھاپہ ماری میں  پولیس نے ایک خاتون سمیت 2 افراد کو گرفتار کر لیا۔ یہ جنسی ریکیٹ کا سرغنہ گاہکوں کو وهاٹس ایپ پر کال گرل کی تصاویر بھیجا کرتا تھا۔ پسند آنے پر اسے بلایا جاتا تھا پھر گاہکوں کو خبر دی جاتی تھی۔

پاش علاقے میں چل رہا تھا سیکس کاروبار
یہ دھندہ شہر کے پوش علاقے پاٹلی پتر کالونی کے ایک اپارٹمنٹ میں گزشتہ کئی سال سے چل رہا تھا۔ جنسی ریکیٹ میں غیر ملکی لڑکیوں تک کے شامل ہونے کی باتیں سامنے آ رہی ہیں۔ خفیہ معلومات کی بنیاد پر پاٹلی پتر تھانہ پولیس نے دیر رات چھاپہ ماری کی۔لڑکیوں کی فحش تصاویر گاہکوں کو واٹس ایپ پر بھیجی جاتیں اور جب گاہک کی رضامندی ہوتی تھی تب وهاٹسپ پر ہی ڈیل درست کی جاتی تھی۔

جنسی ریکیٹ سے کمائی بے شمار جائیداد
پولیس نے جب مذکورہ فلیٹ میں چھاپہ ماری کی تب پتہ چلا کہ فلیٹ میں طویل ہائی پروفائل جنسی ریکیٹ چلایا جا رہا تھا۔ پولیس نے اہم ملزم سجيت کمار، اس کی بیوی ملکہ تھاپا، اور سنیل کمار کو گرفتار کیا ہے۔سرغنہ سجيت گزشتہ پانچ سال سے یہ جنسی ریکیٹ پر چلا رہا تھا۔ یہ سرغنہ اور اس سے منسلک دلال گاہکوں سے رابطہ کے لئے بہت سے موبائل نمبر انٹرنیٹ پر دیتے تھے اور اس کے بعد وهاٹسپ ایپ کے ذریعے بات چیت کر لڑکیوں کی تصویر کا اشتراک کرتے تھے۔ طے شدہ ریٹ پر لڑکیوں کی سپلائی کی جاتی تھیں۔ فی الحال پولیس سرغنہ کی جائیداد کا اندازہ کرنے میں بھی مصروف ہے۔پولیس افسران کی مانیں تو آپریٹر نے بے شمار جائیداد حاصل کی ہے جسے قبضہ کرنے کی بھی کارروائی کی جائے گی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *