اب 45 گھنٹے بعد وکرم پہنچے گا ’چندا ماما‘ کے گھر

Share Article
Now 45 hours later Vikram will arrive at ‘Chandamama’ house

اسرو کے سائنسدانوں نے بدھ کی صبح 3.42 بجے وکرم لینڈر کو چاند کی سب سے نزدیکی مدار میں ڈال دیا۔ اب وکرم چاند سے صرف 35 کلومیٹر ہے۔ تقریباً 45 گھنٹے بعد وکرم چاند کے جنوبی قطب پر اتر جائے گا۔ وکرم کے چاند پر اترتے ہی روور اس میں سے نکل آئے گا اور تحقیق شروع کر دے گا۔

اسرو نے کہا کہ چندریان -2 آربیٹر اپنی 96 کلومیٹر. X 125 کلومیٹر کی موجودہ مدار میں چاند کے چاروں طرف گھوم رہا ہے۔ بھارتی خلائی ایجنسی اسرو کے مطابق، وکرم کا دوسرا ڈی۔ آ ربیٹل آپریشن بدھ کی صبح 3.42 بجے آن بورڈ آپریشننظام کا استعمال کرتے ہوئے شروع ہوا اور نو سیکنڈ میں مکمل ہو گیا۔ یعنی اب وکرم لینڈر چاند کی سطح پر اترنے کے لئے مناسب مدار میں پہنچ گیا ہے۔ اب اگلے تین دنوں تک لینڈر وکرم چاند کی سب سے قریبی مدار35×97 کلومیٹر میں چکر لگاتا رہے گا۔ ان تین دنوں تک وکرم لینڈر اور پرگیان روور کی جانچ کی جاتی رہے گی۔

اسرو کے مطابق، وکرم چاند کے جنوبی قطب پر سات ستمبر کو علی الصبح 1.30 بجے سے 2.30 بجے کے درمیان اترے گا۔ اسرو نے کہا کہ چندریان -2 کے دونوں آربیٹر اور لینڈر صحیح کام کر رہے ہیں۔ پیر کی دوپہر وکرم خلائی وہیکل چندریان -2 سے الگ ہو گیا تھا۔ روور پرگیان ایک قمری دن یعنی زمین کے کل 14 دن تک چاند کی سطح پر رہ کر جانچ کرے گا۔ یہ ان 14 دنوں میں کل 500 میٹر کی دوری طے کرے گا۔ چاند کی سطح پر مسلسل 14 دن تک تجربات کو انجام دینے کے بعد روور پرگیان غیر فعال ہو جائے گا۔ یہ چاند کی سطح پر ہی ہمیشہ ہمیشہ کے لئے موجود رہے گا۔

پرگیان سے پہلے چاند پر سوویت یونین، امریکہ، چین وغیرہ نے پانچ روور بھیجے تھے جو چاند پر ہی غیر فعال پڑے ہیں۔ دوسری طرف آربیٹر چاند کے مدار میں 100 کلو میٹر کی اونچائی پر اس کی کے چکر کاٹتارہے گا۔ آ ربیٹر چاند کے مدار میں ایک سال تک فعال رہے گا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *