اسمگلر انسان ہی نہیں کبوتر بھی

Share Article

پرندے معصوم ہوتے ہیں اور آزاد زندگی جینا چاہتے ہیں مگر یہ آدمی ان معصوم پرندوں سے بھی گناہ کروانے میں ہچکچاہٹ محسوس نہیں کرتا ہے۔ کبوتر کو پوری دنیا میں امن کا پیغامبر کہا جاتا ہے مگر لوگوں کی ہوس پرست طبیعت نے اسے امن کے پیغامبر سے اسمگلر بناکر رکھ دیا۔اب تک یہ سنا جاتا تھا کہ کبوتر سے نامہ برداری کا کام لیا جاتا ہے،ایک جگہ سے دوسری جگہ امن کا پیغام بھیجنے میں استعمال کیا جاتا ہے،لیکن اب نوع انسان نے اپنے گناہوں میں ان پرندوں کو بھی شامل کرنا شروع کردیا ہے۔ ابھی حال ہی میںکویت میں ذرائع ابلاغ کے مطابق کسٹم حکام نے منشیات سمگل کرنے والے ایک کبوتر کو پکڑا ہے۔کویت کے اخبار لرائی کے مطابق کبوتر پر نصب کپڑے کے ایک ننھے تھیلے میں ممنوعہ 178 گولیاں برآمد ہوئی ہیں۔کبوتر کو عراق کی سرحد کے قریب واقع علاقے عبدالی میں کسٹم کی عمارت کے قریب سے پکڑا گیا۔ پکڑی گئی گولیاں غیر قانونی ڈرگ پارٹیوں میں استعمال ہوتی ہیں۔
کسٹم حکام پہلے سے ہی آگاہ تھے کہ کبوتروں کے ذریعے منشیات سمگل کی جا رہی ہیں تاہم ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ سمگلنگ کرتے ہوئے کبوتر کو پکڑا گیا۔تاہم دیگر ممالک میں قانون نافذ کرنے والے حکام نے ایسے واقعات رپورٹ کیے ہیں جن میں کبوتروں کے ذریعے اعلیٰ معیار کی منشیات سمگل کی جا رہی تھیں۔سال 2015 میں کوسٹا ریکا کی ایک جیل کے محافظوں نے جیل میں کوکین اور بھنگ لے جانے والے ایک کبوتر کو پکڑا تھا۔2011 میں کولمبیا میں حکام نے ایک کبوتر کو پکڑا تھا جو منشیات کی زیادہ مقدار کے وزن کی وجہ سے جیل کی دیوار عبور کرنے میں ناکام رہا تھا۔
اس کے علاوہ انڈیا کے سرحدی محافظوں نے پاکستان کی حدود سے آنے والے ایسے کبوتروں کو پکڑنے کا دعوٰی کیا ہے جنھیں مبینہ طور پر جاسوسی کے لیے استعمال کیا جا رہا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *