نتین یاھو کے اشتعال انگیز بیان سے تنائو میں اضافہ ہوسکتا ہے: روس کا انتباہ

Share Article

مشرق وسطیٰ میں نیتن یاہو کے فلسطین کے وادی اردن کو اسرائیل میں ضم کرنے کے اعلان کے بعد حالات کشیدہ ہونے کے خدشات ظاہر کئے جا رہے ہیں۔فلسطین اور اسرائیل کے درمیان امن کو خطرات بھی لاحق ہو سکتے ہیں۔اس سلسلے میں متعد د ممالک نے اپنی تشویشات کا اظہار کیا ہے۔

روس نے خبر دار کیا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنیامن نیتن یاھو کی طرف سے مقبوضہ مغربی کنارے میں وادی اردن کواسرائیل میں ضم کرنے کے اعلان سے خطے میں کشیدگی اور تنائو میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے۔روسی وزارت خارجہ نے اسرائیلی منصوبے پر تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ ایسے کسی بھی اقدام سے خطے میں تناؤ میں تیزی سے اضافہ ہوسکتا ہے اور اسرائیل اور اس کے عرب ہمسایہ ممالک کے مابین امن منصوبے کی امیدوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔خیال رہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنیامن نیتن یاھو نے منگل کے روز مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقے وادی اردن کو 17 ستمبر کو ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے بعد اسرائیل میں ضم کردیں گے۔نیتن یاہو نے ٹیلیویژن خطاب میں کہا کہ ایک ہی جگہ ہے جہاں ہم انتخابات کے بعد ہی اسرائیلی خودمختاری کا اطلاق کرسکتے ہیں۔روسی حکومت کا کہنا تھا کہ یک طرفہ اقدامات سے دو ریاستی حل کی مساعی کو بری طرح نقصان پہنچ سکتا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *