نیتن یاھو’دو ریاستی‘ حل کا بل ناکام بنانے کے لیے اثرانداز ہورہے ہیں

Share Article

 

امریکی سینٹ کی مسلمان رْکن الھان عمر نے اسرائیلی وزیراعظم بنجامن نیتن یاھو پر الزام عاید کیا ہے کہ وہ کانگرس میں تنازع فلسطین کے دو ریاستی حل کے لیے دونوںبڑی جماعتوں ری پبلیکن اور ڈیموکریٹس کی طرف سے مشترکہ طور پربل لانے کوششوں میں رخنہ اندازی کررہے ہیں۔مائیکرو بلاگنگ ویب سائیٹ’ٹویٹر’ پرپوسٹ کی گئی متعدد ٹویٹس میں الھان عمر نے لکھا کہ اسرائیلی وزیراعظم فلسطینی ریاست کی علاحدہ حیثیت کے لیے کی جانے والی کوششوں میں رکاوٹ ڈال رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ نیتن یاھو اور ان کے حامی ایک عرصے سے کانگرس میں مداخلت کرکیتنازع فلسطین کے دو ریاستی حل کی راہ روکنے کی کوشش کر رہے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ارکان ہم پورے عزم کے ساتھ اسرائیلی وزیراعظم کی طرف سے دو ریاستی حل کے خلاف کی جانے والی کوششوں کی روک تھام کریںگے۔ادھر امریکی اخبارات نے ذرائع کیحوالے سے بتایا ہے کہ اسرائیل امریکی ایوان نمائندگا سے قضیہ فلسطین کے دو ریاستی حل کے لیے قرارداد کی منظوری روکنے کی کوشش کررہے ہیں۔جب سے امریکہ میں ڈونلڈ ٹرمپ نے اقتدار سنبھالا ہے امریکہ کی طرف سے فلسطین۔ اسرائیل تنازع کے دو ریاستی حل کی امریکی حمایت میں کمی آئی ہے۔

 

 

کانگریس میں فلسطین کے دو ریاستی حل کی حمایت میں بل ری پبلیکن رکن لینڈسی گراہم اور ڈیموکریٹک کے کریس وان ہولن کی طرف سے تیار کیا گیا ہے۔ری پبلیکن پارٹی میں گراہم جیسیارکان پارلیمنٹ کی طرف سے اس قرارداد کی حمایت سے اشارہ ملتا ہے کہ قضیہ فلسطین کے دو ریاستی حل کے لیے کانگرس میں یہ قرارداد بھاری اکثریت سے منظور ہوجائے گی تاہم اسرائیلی وزیراعظم اس قرارداد پر اثرانداز ہونے کی کوشش کررہے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *