این ڈی اے کی میٹنگ میں رام مندر کے معاملے پر آپس میں بھڑے بی جے پی -جے ڈی یو کارکنان، ویڈیو

Share Article

BJP-JDU

لوک سبھا انتخابات 2019 میں بھلے ہی انتخابات بی جے پی -جے ڈی یو ساتھ لڑنے کا دعوی کر رہی ہے لیکن اندرخانے دونوں ہی پارٹیوں کے کارکن اس اتحاد سے خوش نہیں ہیں۔ دونوں پارٹیوں نے ہاتھ تو ملا لیا ہے مگردل نہیں ملا پائے ہیں ۔جیساکہ کل دیکھنے کو بھی ملا ہے۔دراصل حاجی پور میں این ڈی اے کی میٹنگ میں جے ڈی یو اور بی جے پی کارکنوں میں زبردست گھمسان دیکھنے کو ملا۔ رام مندر کے معاملے کو لے کر بی جے پی۔جے ڈی یو کے کارکنوں کے درمیان ہنگامہ اس قدر بڑھ گیا کہ ہاتھاپائی کی بھی نوبت آ گئی اور دونوں کے درمیان کچھ ہاتھاپائی بھی ہوئی۔اتنا ہی نہیں، ہنگامہ کر رہے بی جے پی کارکنوں نے منچ کے سامنے پہنچ کرجے ڈی یو لیڈروں سے بدسلوکی کی اور منچ سے لیڈروں کو اتارنے کی کوشش بھی کی۔

دراصل، بہار انتخابات میں مندر کے مسئلے کو کنارے کرنے کی بات پر میٹنگ میں بی جے پی کارکن بھڑک اٹھے۔ بھری میٹنگ میں بی جے پی کارکنان نے اسٹیج کے سامنے پہنچ کرجے ڈی یو لیڈروں سے بدسلوکی کی اور ان سے ہاتھاپائی بھی۔ جے ڈی یو کے قومی سکریٹری سنجے ورما کے انتخابات میں مندر مسئلے کو کنارے کئے جانے کی بات سن کربی جے پی کے کارکن بھڑک گئے اور منچ کے سامنے پہنچ کرکافی دیر تک ہنگامہ کیا۔جے ڈی یو لیڈر سنجے ورما کہہ رہے تھے کہ حاجی پور میں رام مندر پبلسٹی (تشہیر)کامسئلہ نہیں بننا چاہئے۔ بس اسی بات پر بی جے پی کے کارکنان ہنگامہ کرنے لگے۔

این ڈی اے کے مقامی امیدوار مرکزی وزیر رام ولاس پاسوان کے بھائی پشوپتی پارس کے ساتھ این ڈی اے کی کوآرڈینیشن اجلاس منعقد کیا گیا تھا۔ اسی دوران مندر کی بات پر بی جے پی کارکن بھڑک اٹھے۔ بی جے پی کارکنان زبردست ہنگامہ کرنے لگے اور منچ کے قریب پہنچ کرٹیبل پیٹنے لگے۔ منچ سے اترکر مقامی بی جے پی ممبر اسمبلی نے سمجھانے کی بھی کوشش کی۔ اتنا ہی نہیں، انہوں نے منچ سے ہی مندر مسئلے پر بیان کو لے کر معافی بھی مانگی۔ مگر ہنگامہ یہیں نہیں رکا اور ہاتھاپائی بھی ہونے لگی۔
بہرکیف لوک سبھا انتخابات 2019 کے انتخابی دنگل جاری ہے اور جمعہ کو بہار میں این ڈی اے کے اتحادی پارٹی بی جے پی اور جے ڈی یو میں ہی اصل دنگل دیکھنے کو ملا۔میٹنگ دونوں پارٹیوں کے کارکنان کے درمیان ہنگامہ کے ساتھ ساتھ ہاتھاپائی بھی ہوگئی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *