این آر سی: مرکز اور آسام کی درخواست پر 23 جولائی کو سماعت

Share Article

 

نئی دہلی: سپریم کورٹ آسام میں قومی شہری رجسٹر (این آر سی) کو آخری شکل دینے کے لئے مقررہ وقت کو بڑھانے کے مرکزی اور ریاستی حکومت کی درخواست پر 23 جولائی سماعت کرے گا۔مرکز ی اور آسام کی حکومت نے جمعہ کو عدالت سے این آر سی کو حتمی شکل دینے کے لئے طے شدہ آخری تاریخ (31 جولائی) کو بڑھانے کی درخواست کی۔ دونوں حکومتوں نے چیف جسٹس رنجن گگوئی اور جسٹس روہنگٹن ایف نریمن کی بینچ کے سامنے کہا کہ ہندوستان کو دنیا کے پناہ گزینوں کی راجدھانی بننے نہیں دیا جاسکتا۔

 

دونوں نے این آر سی میں شامل شہریوں کے نمونے کی توثیق بھی درخواست کی ہے۔ مرکز اور ریاستی حکومت کی طرف سے پیش ہونے والے سالیسٹر جنرل تشار مہتا نے کہا کہ بنگلہ دیش کے ساتھ متصل اضلاع میں مقامی حکام کی ساز باز کی وجہ سے لاکھوں لوگوں کو غلط طریقے سے آسام قومی شہری رجسٹر میں شامل کیا گیا ہے۔مسٹر مہتا نے دلائل دیئے کہ غلط طریقے سے بعض لوگوں کو شامل کئے جانے اور کچھ لوگوں کو اس سے باہر رکھے جانے کا پتہ لگانے کے لئے 20 فیصد نمونہ سروے کی تصدیق کرنے کی اجازت دی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا، ’’ہمیں این آرسی شامل میں ملوث لوگوں کے لئے نمونے کی توثیق کے عمل پر پھر سے غور کرنے کی ضرورت ہے۔ عدالت نے مرکزی اور ریاستی حکومت کی درخواست پر غور کرنے کے لئے 23 جولائی کی تاریخ کی مقر کی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *