نکسلیوں نے وزیرکو بتایا دھوکہ باز، بھوپیش حکومت کو بتایا وعدہ خلافی والی حکومت

Share Article

چھتیس گڑھ کے سکما ضلع میں نکسلیوں کے ذریعہ پریس ریلیز جاری کر چھتیس گڑھ کابینہ وزیر کو دھوکے باز قرار دیتے ہوئے کہا گیا ہے کی انتخابات کے پہلے قبائلی حمایتیہونے کا ڈھنڈورا پیٹنے والے جھوٹے، قبائلیوں کا غدار، دھوکے باز کواسی لکھما اقتدار میں بیٹھتے ہی قبائلیوں کے جل۔ جنگل ۔ زمین و وسائل کو کوڑیوں کی قیمت میں مقامی و غیر ملکی سرمایہ داروں کے حوالے کرنے کے لئے خود وزیر صنعت بن بیٹھے ہیں۔

فرضی تصادم کی مخالفت کرنا تو دور انہیں انجام دینے والے ڈی آر جی کے غنڈوں کو انعام و آوٹ آف ٹرن یعنی ان کی ‘بہادری’ کو دیکھتے ہوئے وقت سے پہلے ہی پروموشن دے رہا ہے۔ اسی کی نگرانی میں چھتیس گڑھ زمینتحویل، بحالی، بازآبادکاری سے متعلق قانون، 2019 منظور کیا گیا ہے جوکہ ریاست کے کسانوں، دلتوں اور قبائلیوں کی زمینوں، جنگلات، کانوں کو چھین کر سرمایہ داروں کے حوالے کرنے کے لیے ہی بنایا گیا ہے۔ قبائلیوں کو دہشت میں ڈال کر کان کنی کے منصوبوں جیسے نندراج پہاڑ سے لے کر شمال میں ہاہلادی ، مان پور تک اور وسیع ڈیم منصوبوں کو شروع کرنے کے لئے ہی فرضی تصادم ، گرفتاریوں، گائوں پر حملوں، مظالم، عوام کے ساتھ مارپیٹ کا سلسلہ جاری ہے۔

جنوبی بستر ڈویزنل کمیٹی کے سکریٹری وکاس نے پریس ریلیز میں الزام لگایا ہے کہ ہے کہ 14 ستمبر کوکوتاگڑا گاؤں، چنتلنار پنچایت، سکما ضلع کے دیہی باشندے اپنے گاؤں کے پجاری کو منتخب کرنے کے لئے اپنی روایت کے مطابق شکار کرنے جنگل میں گئے تھے۔ جنگلی سور جو شکار کے دوران زخمی ہوا تھا،ان کا پیچھا کرنے کے دوران چنتلنار تھانہ تحت کے برکاپال کیمپ سے گشت پر نکلی ڈی آر جی کی ٹیم نے دیہی باشندوں پر اندھا دھند فائرنگ کر کے تین لوگوں- سوڑی دیوال، مچاکی ہڑما، مچاکی ہڑما کا بے رحمنانہ قتل کیا۔ ان میں سے سوڑی دیوال کی واردات پر ہی موت ہوئی جبکہ دو دیگر دیہی باشندوں کو زخمی حالت میں پکڑ کر انہیں اذیتیں دے کر پولیس نے انکا بھی بے رحمی سے قتل کر دیا۔ زخمی حالت میں پکڑے گئے دیہی باشندوں کوقتل کرنے میں ڈی آر جی تمماپورم کے نوپا بھیمال- ڈانکا کا اہم کردار سامنے آیا، جسے انقلابی عوام کبھی معاف نہیں کرے گی۔ اس واقعہ میں زخمی باڑسے جوگا سمیت پانچ دیہی باشندوں کو پکڑ کر تھانہ لے جا کربے رحم طریقہ سے مارپیٹ کرنے کے بعد چھوڑ دیا گیا۔ بھارت کی کمیونسٹ پارٹی (ماؤنواز) کی جنوبی بستر ڈویژنل کمیٹی اس فرضی تصادم کی سخت سے سخت الفاظ میں مذمت کرتی ہے۔ نکسل پریس ریلیز میں ایس ٹی ایف جوانوں اور افسران کو سخت سے سخت سزا دینے اور ڈی آر جی کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *