ملائیشیا میں پھنسے جھارکھنڈ کے 48 مزدور، لگا رہے واپسی کی گہار

Share Article
workers-of-jharkhand

ہزاری باغ: پیسہ کمانے کی چاہت میں مزدور اپنی جان کو بھی داؤ پر لگا کر بیرون ملک جا رہے ہیں۔ گزشتہ پانچ سال سے بیرون ملک ایجنٹوں کی غلطی سے پھنسے ہوئے سیکڑوں مزدور بحفاظت واپسی کو لے کر مسلسل فریاد لگاتے رہے ہیں۔ ان میں کئی کو واپس بھی لایا گیا ہے۔ اب پھر ملائیشیا میں 48 لوگوں کی پھنسنے کی معلومات ملی ہے۔

ملائیشیا میں پھنسے 48 مزدوروں میں جھارکھنڈ کے ہزاری باغ، گریڈیہہ، کوڈرما سمیت کئی مقامات کے ہیں۔ یہ تمام ٹرانسمیشن کام کے لئے ملائیشیا گئے تھے، یہ ملائیشیا کے بلنٹلو میں پھنسے ہیں، جہاں کام دلانے کے نام پر ان مزدوروں کو لے جایا گیا، وہاں انہیں کام نہ دے کر دیگر مزدوروں کو کام پر لگا دیا گیا ہے۔ کافی کم پیسے میں ان سے کام کرایا جا رہا ہے۔

انہیں جون 2018 میں ٹرانسمیشن لائن میں کام کرنے کے لئے چنئی کے ٹھیکیدار کی طرف سے ملائیشیا بھیجا گیا تھا۔ مزدوروں کو کام کرنے کے بدلے میں اجرت کے طور موٹی رقم کے علاوہ کھانے پینے اور رہنے کی بہتر سہولت دینے کا خواب دکھایا گیا تھا۔ ملائیشیا جانے کے لئے مزدوروں سے انٹرویو اور میڈیکل جانچ فیس وغیرہ کے نام پر 20۔20 ہزار روپے بھی وصول کئے گئے تھے۔ بتایا جاتا ہے کہ مزدوروں کو ٹھیکیدار کا صحیح نام اور پتہ تک معلوم نہیں ہے۔ انہیں صرف ٹھیکیدار کا ٹھکانا چنئی ہونے بھر کی معلومات ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *