bangladesh-myanmar
روہنگیائی مسلمانوں کے اپناملک واپسی کاراستہ صاف کرنے کیلئے میانماراوربنگلہ دیش کے بیچ 23نومبرکوسمجھوتے پردستخط کئے گئے۔میانمارکے رخائن ریاست میں فوج کی کارروائی کے بعداگست مہینے میں تقریبا6لاکھ سے زائدروہنگیائی مسلمانوں نے بھاگ کربنگلہ دیش میں پناہ لی ہے۔روہنگیاپناہ گزیں بحران کودورکرنے کیلئے دنیابھرسے بہت زیادہ دباؤڈالاگیا۔اپنے ملک واپسی کی شرطوں کولیکرہفتوں ٹکراؤکے بعدمیانمارکی راجدھانی نیپدومیں سمجھوتہ کیاگیا۔اس سے پہلے میانمارکی لیڈرآنگ سان سوکی اوربنگلہ دیش کے وزیرخارجہ اے ایچ محمودعلی نے بات چیت کی۔
عیاں رہے کہ میانمارکے دارالحکومت نیپدومیں طے پانے والے اس معاہدے کی تفصیلات جاری نہیں کی گئی ہے۔اس بارے میں بنگلہ دیش کاکہناہے کہ یہ پہلاقدم ہے۔میانمارنے کہاہے کہ وہ روہنگیاکوجلدازجلدواپس لینے کیلئے تیارہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here