دفعہ341 میں مسلمانوں کو شامل کیا جائے: مفتی مکرم احمد

Share Article

مسجد فتحپوری دہلی کے شاہی امام مولانا ڈاکٹر مفتی محمد مکرم احمد نے آج نماز جمعہ سے قبل خطاب میں مسلمانوںسے اپیل کی کہ کامیابی حاصل کرنے کیلئے ہر میدان میںجدوجہد کریں ۔حضور ﷺ کے پاس ایک صحابی سوال کرنے آئے تھے تو آپ نے انہیں نصیحت کی اور ان سے کلہاڑی منگا کر خو د اس میں دستہ لگایا اور فرمایا روز لکڑی کاٹ کر لا کر بیچا کرو ۔انہوںنے نصیحت پر عمل کیا اور ان کی غریبی دور ہوگئی ۔مفتی مکرم نے کہا کہ ہر میدان میں سخت جد وجہد کرکے آگے بڑھنا چاہئے تب ہی اللہ کی مدد آئے گی ۔

انہوںنے کہا کہ ہندستان میں مسلمانوں کی معاشی بدحالی اور پسماندگی زیادہ ابتر ہے اسے سب جانتے ہیں اس کی وجہ یہ ہے کہ دفعہ341 میں چھوٹے پیشہ کرنے والے جیسے دھوبی ، بڑھئی ، بنجارے ، موچی وغیرہ کو خصوصی رعایتیں ملتی ہیںلیکن ان میں سے مسلم قوم کو باہر کر دیا گیا ہے اور 1950ء سے یہ ناانصافی برابر جاری ہے ، دوسری قومیں اس دفعہ کے تحت مراعات حاصل کر رہی ہیں اور بہتر حالت میں ہیں۔حکومت سے ہماری اپیل ہے کہ اس بندش کوہٹایا جائے اور341میں اقتصادی پسماندگی کی بنیاد پر مسلمانوں کو شامل کیا جائے۔

انہوںنے افغانستان میں دہشت گردانہ حملوں کی مذمت کی جس میں کثیر تعدا د میں عام شہریوں کی ہلاکت ہورہی ہے ۔افغانی فوج کی جوابی کاروائی میں بھی عوام مارے جا رہے ہیںاس کا شدیدغم ہے ،افغانستان کے لوگوں کو غور کرکے اپنے اندر اصلاح کرنی چاہئے ۔یہ ناجائز اور حرام ہے جس کا شدید گناہ ہے ۔انہوںنے سعودی تنصیبات پر حملہ کی بھی مذمت کی اور راسے اسرائیل کی سازش کا حصہ بتایا ۔مسلم ممالک میں جنگ کروانے کیلئے اور خطہ میں بد امنی پھیلانے کے لئے دشمنان ِاسلام سازشیں کر رہے ہیں ان سے ہوشیا ررہنے کی ضرورت ہے ۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *