مسلمانوں نے پیش کی اتحاد اور بھائی چارے کی مثال، کانوڑیو ں کو تقسیم کئے پھل اور دودھ

Share Article

muslims-in-aligarh

لکھنؤ: ملک کے الگ الگ حصوں سے پرور -تہوار پر فرقہ وارانہ ہم آہنگی بگاڑنے کی خبریں اکثر سامنے آتی ہیں، لیکن اسی درمیان علی گڑھ میں مسلم فرقے کے لوگوں نے اتحاد اور بھائی چارے کی منفرد مثال پیش کی ہے،جہاں مسلم فرقے کے لوگ کانوڑیوں کو پھل اور دودھ بانٹتے نظر آ رہے ہیں۔

شیوراتری کے موقع پر کانوڑیوں کی ہر ہر مہادیو کی گونج کے درمیان یہ خبر سکون دینے والی ہے۔ ہندو مسلم اتحاد کی یہ مثال ملک کی گنگا جمنی تہذیب اور سماجی تانے بانے کو بگاڑنے والوں پر کرارا طمانچہ ہے۔

علی گڑھ میں ’ہندو مسلم بھائی بھائی‘ کے نعرے کو اگر صحیح معنوں میں کسی نے ثابت کیا ہے تو وہ ہیں یہاں کے امان اللہ خان اور ان کے کچھ ساتھی، جو کانوڑیوں کی خدمت میں لگے ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ’بھولے ناتھ نے انہیں لوگوں کی خدمت کرنے کا موقع دیا ہے، اس لیے وہ کر رہے ہیں۔‘

ایسا نہیں ہے کہ صرف مسلم ہی ہندوؤں کے تہوار میں شرکت کرتے نظر آتے ہیں بلکہ یہاں ہندو فرقے کے لوگ بھی رمضان اور دوسرے تہوار پربھی شرکت کرتے ہیں۔ امان اللہ خان نے ایک نیوز ایجنسی سے کہا کہ ’ان کے علاقے کے ہندو بھی ان کے ساتھ رمضان میں روزہ رکھتے ہیں۔‘

وہیں سوشل میڈیا پر بھی اتحاد اور بھائی چارے کی مثال پیش کرتی یہ تصاویر وائرل ہو رہی ہیں۔ کسی نے اسے ہندوستان کی خوبصورتی قرار دیا ہے تو کوئی ٹوٹٹر پر سارے جہاں سے اچھا ہندوستان لکھاتا نظر آ رہا ہے۔ ان کے درمیان کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو ہمیشہ مل جل کر رہنے کی بات کہہ رہے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *