مسلم پرسنل لاء بورڈکاکرنول میں عظیم الشان جلسہ عام

Share Article
Kurnool-Photo-2
مسلمانوں کوجان سے زیادہ اپنی شریعت پسندہے،شریعت پرعمل کرنے سے دنیاکی کوئی طاقت روک نہیں کرسکتی۔مودی کوچاہئے کہ وہ اپنے خیالات میں تبدیلی لالیں۔ان خیالات کااظہارمولانامحمدحسام الدین ثانی نے کیا۔آل انڈیامسلم پرسنل لاء بورڈضلع کرنول کے زیراہتمام صدرکل ہندمجلس اتحادالمسلمین ورکن پارلیمنٹ حیدرآبادبیرسٹراسدالدین اویسی کی صدارت میں عثمانیہ کالج میدان کرنول میں”تحفظ شریعت واصلاح معاشرہ” کے عنوان پرعظیم الشان جلسۂ عام منعقدکیاگیا۔
اس موقع پرمولانامحمدحسام الدین ثانی جعفرپاشاہ صاحب رکن آل انڈیامسلم پرسنل لاء بورڈنے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اپنے مسائل کی یکسوئی کے لئے علماء کاانتخاب کریں۔انہوں نے کہاکہ ہمارے اختلافات سے دشمن استفادہ کی تاک میں ہیں،اختلافات سے بچیں،متحدہوجائیں۔آپسی معاملات کومذہذبی رہنماوؤں کے پاس حل کرلیں۔
رکن پارلیمنٹ اورآل انڈیامجلس اتحادالمسلمین کے قومی صدربیرسٹراسدالدین اویسی نے اپنے صدارتی کلمات میں کہاکہ ملک کے حالات نازک ہیں،انہوں نے اپنی بات کوجاری رکھتے ہوئے کہاکہ پارلیمنٹ میں جوکچھ مسلمانوں کے تعلق سے دیکھ رہاہوں میری زندگی میں کبھی نہیں دیکھا۔انہوں نے دعاکی کہ ملک کے حالات بدترسے بدترہیں، خصوصاپارلیمنٹ میں جودیکھاوہ میرے لئے خطرناک دن تھا،ایسالگ رہاتھاکہ بابری مسجدکی شہادت کادن ہے۔نہوں نے مسلمانوں سے درخواست کی کہ وہ بلاتفریق مسلک متحدہوجائیں،اسی میں ہماری بھلائی وکامیابی ہے۔عقیدے اپنے اپنے الگ الگ ہوسکتے ہیں،لیکن شریعت سب کی ایک ہی ہے۔
مولانااولیا حسینی مرتضی پاشاہ قادری نبیر�ۂ شیخ الاسلام نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ دین کی دعوت دیں،ایک عام مسلمان کی حیثیت سے زندگی بسرکریں۔امیرجماعت اسلامی تلنگانہ وآندھراپردیش جناب حامدمحمدخاں صاحب نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مسلمانوں پرمظالم کوئی نیامسئلہ نہیں ہے،اس سے پہلے بھی کئی مسائل پیداکئے گئے،مسلمانوں کاقتل کیاگیا،چھوٹے چھوٹے بہانہ مسلم نوجوان قیدکئے گئے،سب کچھ ہم نے برداشت کیا،لیکن شریعت میں مداخلت ناقابل برداشت ہوگا۔مولاناسید احمدالحسینی سعیدقادری صاحب رکن یونائٹیٹ مسلم فورم نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مذہب اسلام پرعمل کرو،دین کی دعوت دو،غیروں میں بھی دین کی دعوت دو،اللہ کے احکامات پراوراس کے پاک رسول ؐکے سنتوں پرعمل کرو،خودبخوددشمن تم سے ڈریں گے۔
مولاناضیاء لدین نیرصاحب نائب صدرکل ہندمجلس تعمیرملت نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مذہب اسلام حق ہے،سچااورپاک مذہب ہے،تاقیامت اس کوکوئی مٹھانہیں سکتا،بشرطیکہ ہم اس پرعمل کریں۔مولاناصفی احمد مدنی امیرجمعیت اہلحدیث تلنگانہ نے کہاکہ اسلام کے علاوہ کوئی ایسامذہب نہیں ہے جس میں پوری سچائی ہو۔اس موقعہ پرجناب محمدرحیم الدین انصاری صاحب رکن آل انڈیامسلم پرسنل لاء بورڈوناظم جامعہ اسلامیہ دارلالعلوم حیدرآباد،مولاناسیدقبول پاشاہ قادری نے بھی خطاب کیا۔کنوینرمسلم پرسنل لاء بورڈضلع کرنول مولاناسیدذاکراحمدرشادی نے افتتاحی کلمات پیش کرتے ہوئے ایک قراردادپیش کیا جس میں کھلے عام اعلان کیاگیاکہ ہم مسلمان حکومت کے فیصلہ کونہیں مانیں گے۔مقامی مقررین میں تلگودیشم پارٹی سے بی اے کے پرویز نے بات کرتے ہوئے کہاکہ حکومت ہمارے ساتھ ظلم کررہی ہے،اس ظلم کوہم برداشت نہیں کریں گے،انہوں نے کہاکہ ہماری شریعت میں دخل اندازی کاحکومت کوکوئی حق نہیں ہے،آوازکمیٹی سے جناب اقبال صاحب نے بات کرتے ہوئے فرقہ پرست طاقتوں سے مقابلہ کرنے کے لئے مسلمانوں کے ساتھ ساتھ برادران وطن کوساتھ لیناکااعلان کیا،سجادہ نشین درگاہ طاہرگلشن کرنول ڈاکٹراسمعیل پیرقادری صاحب نے بات کرتے ہوئے حکومت کوفیصلہ کورد کرنے اوراس کے خلاف جدوجہدکرنے کاتیقن دیا،جماعت اسلامی سے ایس اے امیرصاحب نے خطاب کیا،وائی ایس آرکانگریس پارٹی سے عبدالحفیظ خاں صاحب نے بات کرتے ہوئے کہاکہ شریعت محمدیؐمیں دخل نامناسب ہے،انہوں نے کہاکہ علماء کے مشورے کے بغیرطلاق کے سلسلہ میں بل تیارکرنایہ کھلے عام دہشت گردی ہے،مسلمانوں کوذہنی تناؤمیں مبتلاء کرنے کے برابرہے۔
ایس ڈی پی آئی سے عبداللہ خاں صاحب نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت یہ ڈرامہ بازی چھوڑدے،انہوں نے کہاکہ انتخاباتاکے دوران عوام سے کئے گئے وعدوں کوفراموش کرنے کے لئے طلاق ثلاثہ کامسئلہ لائی ہے ،اس سے مسلمان ڈرنے اورگھبرانے والانہیں ہے۔مولاناعبدالماجدصاحب نے کہاکہ شریعت محمدیؐہماری زندگی کانصب العین ہے،اس کے خلاف جدوجہدہماری اخلاقی ذمہ داری ہے۔،جمعیت اہلحدیث سے حافظ منظوراحمدصاحب نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ملک میں نہ صرف دین کوخطرہ ہے بلکہ جمہوریت اوردستورکوبھی خطرہ ہے،اس کے لئے ہم سبکومتحدہ منہ توڑجواب دیناچاہئے۔مولاناعبدالقدیرصاحب شعیبی نے کہاکہ شریعت محمدیؐتاقیامت قائم رہنے والی ہے،اس میں کوئی تبدیلی تاقیامت نہیںآئے گی،ہم اپنی جانوں کوقربان کردیں گے لیکن دین میں تبدیلی یامداخلت برداشت نہیں کریں گے۔
نائب صدرمسلم پرسنل لاء بورڈضلع کرنول مولانامحمدعمرناظم صاحب نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ جمہوریت میں ہرشخص کواپنے مذہب پرپوری آزادی کے ساتھ عمل کرنے کاحق حاصل ہے،کسی کوکسی دوسرے مذہب پرنکتہ چینی کرنے یادخل اندازی کاحق نہیں ہے۔مولاناعبدالقدیرصاحب شعیبی کی قرأۃ کلام پاک سے جلسہ کاآغازکیاگیا۔جبکہ مولاناعبدالرقیب حسامی نے بارگاہ رسالتؐمیں نعت شریف کانذرانہ پیش کرنے کی سعادت حاصل کی۔صدرمجلس العلماء والائمہ کرنول مولانازبیراحمدخاں صاحب نے نظامت کے فرائض انجام دئے۔حافظ معین احمد حمیدی نے پرسنل لاء بورڈکی نظم سنائی۔
اس موقعہ پرڈاکٹرنعیم الرحمن جماعت اسلامی، الیاس سیٹھ ،مولانامحمدمرتضی عمری،مولانامحمدالیاس قاسمی،محمدغوث نوبل سرویس سوسائٹی،مفتی عبدالقادر صدرمجلس تحفظ عقائداہل سنت والجمات کرنول،گورنمنٹ قاضی حافظ سیدسلیم باشاہ ،قاضی مطہرجامعی ، جہانگیرباشاہ ،مفتی عبدالرحمن رشادی،الحاج تاڑپاڑمحبوب صاحب،پرنسپال اسلایہ عربی وڈگری کالج کرنول مولاناخواجہ معین الدین صاحب،اے اوعثمانیہ کالج کرنول سیدسمیع الدین مزل ،مفتی شاہ ولی اللہ،مولاناجابرحسین،مفتی عبدالسلام کوثرؔ ،عبدالحمید، محمدمکرم ،مفتی عبدالرحمن رشادی،محمداکرم ایڈوکیٹ،عبدالغفور،ڈاکٹرامتیازنندیال، عبدالرزاق ، مقبول احمدخاں،برائڈاینڈکو اقبال ،حافظ عبدالحمید،صدرنشین وقف بورڈآندھراپردیش مؤمن احمدحسین ،مولانانوراحمد،حافظ امجد نندیال،مولانایوسف یمگنور،حافظ رحمت اللہ ،مولاناجوادویلگوڑ کے علاوہ دس ہزارسے زائدمردوخواتین شریک رہے۔تمام مسالک اورسیاسی جماعتوں کے ذمہ داروں کے علاوہ علماء،حفاظ،عمائدین شہرکی کثیرتعدادشریک رہی۔جلسہ میں تمام مہمانان ومقررین کااستقبال عالیشان پیمانہ پرکیاگیا۔ پولیس افسروں نے جلسہ کے انعقادمیں تعاون کیا۔استقبالیہ کمیٹی کے ذمہ داران اورپاپولرفرنٹ آف انڈیاکے نوجوانوں نے زبردست انتظامات سنبھالے۔ آخرمیں مولاناسیدسلیمان ندویؔ کے ہدیۂ تشکرپرجلسہ اختتام پذیرہوا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *