سی ایس ٹی پل حادثہ میں 6 کی موت،بی ایم سی ۔ ریلوے حکام پر مقدمہ درج، توڑا گیا پل

Share Article

mumbai-cst-bridge-collapse

ممبئی: ملک کی اقتصادی دارالحکومت ممبئی ایک بار پھر حادثے کا شکار ہوئی ہے۔ جمعرات کی شام ممبئی کے سی ایس ٹی ریلوے اسٹیشن کے پاس فٹ اوورپل گر گیا۔اس حادثے میں 3 خواتین سمیت کل 6 لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔ اب بھی 30 سے زائد افراد زخمی ہیں۔ حادثے کے بعد حکومت کی جانب سے معاوضے کا اعلان ہو گیا ہے، ممبئی پولیس نے اس حادثے میں ریلوے اور بی ایم سی حکام کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے۔ یہ کیس آزاد میدان پولیس اسٹیشن میں درج کیا گیا ہے۔ حالانکہ اس پر شام سے ہی سیاست بھی جاری ہے۔ بی ایم سی اور ریلوے کے درمیان پل کی نگرانی کو لے کر ایک دوسرے پر الزام لگانے کا سلسلہ جاری ہے۔

’قصاب پل ‘کے نام سے تھا مشہور
foot-overbridge

مشہور شیوا جی ریلوے اسٹیشن کے قریب واقع اس پل کو عام طور پر ’قصاب پل‘ کے نام سے جانا جاتا ہے کیونکہ 26/11 ممبئی دہشت گردانہ حملے کے دوران دہشت گرد اسی پل سے گزرے تھے۔ ایک عینی شاہد نے بتایا کہ جب پل منہدم ہواتب پاس کے سگنل پر لال بتی کے سبب ٹریفک روک دی گئی تھی اور اسی وجہ سے زیادہ اموات نہیں ہوئی۔

 

 

مرنے والوں کی شناخت اپورپربھو (35)، رنجنا تانبے (40)، بکتی شندے (40)، زاہد شیراز خان (32) آر ٹی سنگھ (35) کے طور پر ہوئی ہے۔ پربھو اور تانبے جی ٹی اسپتال میں کام کرتے تھے۔

حکومت نے اب تک کیا کیا؟

مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ دویندر فڑنویس نے مرنے والوں کے لواحقین کے لئے پانچ پانچ لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا ہے۔ اس کے علاوہ 40 سال پرانے اس پل کے گرنے کی جانچ ایک اعلی سطحی کمیٹی کرے گی۔ زخمیوں کو 50۔50 ہزار روپے کی امدادی رقم دی جائے گی، ان کے علاج کا خرچ حکومت برداشت کرے گی۔حادثے پر وزیر اعظم نریندر مودی، ریلوے کے وزیر پیوش گوئل اور مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ دیویندر فڑنویس نے افسوس ظاہر کیا ہے۔

 

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *