مرکزی وزیرمختار عباس نقوی نے وزیر اعظم کی جانب سے درگاہ اجمیر شریف پر چادر چڑھائی

Share Article

naqvi

نئی دہلی:اقلیتی امو رکے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے آج وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے درگاہ اجمیر شریف پر چادر چڑھائی۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف وزیر اعظم نریندر مودی انسانی قدروں اور انصاف کا تحفظ کرنے کے لئے صوفی سنتوں کی میراث میں یقین رکھتے ہیں تو دوسری طرف وہ دہشت گردی کے خلاف ایک قومی مجاہد ہیں۔ نقوی نے کہا کہ وزیر اعظم نے دہشت گردی کو قطعی برداشت نہ کرنے کے اصول کو اپنا کر قومی سلامتی کے تئیں اپنے پختہ عزم کا اظہار کیا ہیاور وہ اس سمت میں انتھک کام کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا روحانی اور صوفی کلچر، دہشت گردی اور ہر طرح کے تشدد کو نیست و نابود اور شکست دے کر انسانیت اور امن کو یقینی بنانے کی ایک ضمانت ہے۔

مختارعباس نقوی نے اس موقع پر اجمیر شریف میں صوفی سنت حضرت خواجہ معین الدین چشتی ؒ 807ویں عرس کے موقع پر ان کی درگاہ پر چادر چڑھائی۔ انہوں نے وزیر اعظم کا ایک پیغام بھی پڑھ کر سنایا، جس میں انہوں نے سالانہ عرس کے موقع پر ہندوستان اور بیرون ملکوں میں خواجہ معین الدین چشتی ؒ کے پیروکاروں کے تئیں مبارک باد اور نیک خواہشات سے آگاہ کیا۔
naqvi-ajmer
وزیر اعظم نے اپنے پیغام میں کہا کہ ہندوسان میں مختلف مذاہب ، برادریوں، فرقوں اور عقیدوں کے ماننے والوں میں ہم آہنگی اور بقائے باہم ہمارے ملک کی خوبصورتی ہے۔ہمارے ملک میں مختلف سنتوں ، پیروں اور فقیروں نے وقتاً فوقتاً امن، اتحاد اور ہم ا ?ہنگی کا پیغام دیا ہے۔ انہوں نے نظم و ضبط اور شائستگی کے علاوہ صبر وتحمل کا پیغام پھیلانے میں کلیدی رول ادا کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ خواجہ معین الدین چشتیؒ ہندوستان کی عظیم روحانی روایات کی علامت ہیں۔ انسانیت کے لئے خواجہ معین الدین چشتیؒ کی خدمات آنے والی نسلوں کو تحریک دیتی رہیں گی۔ اس عظیم صوفی سنت کے سالانہ عرس کے موقع پرمیں درگاہ اجمیر شریف پر چادر بھیج کر انہیں اپنی طرف خراج پیش کرتا ہوں۔معاشرے کے سبھی طبقوں کے لوگوں نے وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے پیش کی گئی چادر کا دلی خیر مقدم کیا۔

اس موقع پر نقوی نے اجمیر درگاہ کمیٹی کی جانب سے قائم کی جانے والی قاعد وشرام استھلی میں خواجہ غریب نوازؒ یونیورسٹی کا سنگ بنیاد بھی رکھا۔انہوں نے اجمیر میں سول لائن کے پاس درگاہ اپارٹمنٹ میں خواجہ غریب نواز ؒ ڈسپنسری اوپی ڈی کا بھی افتتاح کیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *