نریندرمودی کی حکومت جامع ترقی اور سب کا یقین حاصل کرنے کیلئے پرعزم ہے: مختارعباس نقوی

Share Article

 

مرکزی اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی نے آج یہاں کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی’انصاف، ایمان اور اقبال کی حکومت‘ نے’ترقی کی صحت‘ کو ’فرقہ پرستی اورمنہ بھرائی کی بیماری‘سے نجات دلا کر’ صحت مند امپاورمنٹ‘کا ماحول تیار کیا ہے۔آج نئی دہلی میں انتودے بھون میں مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کی 112 وی گورننگ باڈی اور 65 وی جنرل باڈی میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے مختارعباس نقوی نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت ’جامع ترقی،سب کا یقین حاصل کرنے کیلئے پرعزم ہے۔

 

نقوی نے کہا کہ اقلیتی طبقے کی اسکول ڈراپ آؤٹ لڑکیوں کو ملک کے ممتاز تعلیمی اداروں سے برج کورس کرا کر انہیں تعلیم اور روزگار سے جوڑا جائے گا۔ ملک بھر کے مدارس میں مرکزی دھارے کی تعلیم کی حوصلہ افزائی کرنے کے لئے مدرسہ اساتذہ کو مختلف تعلیمی اداروں سے تربیت دلائی جائے گی، تاکہ وہ مدرسوں میں مرکزی دھارے کی تعلیم- ہندی، انگریزی، ریاضی، سائنس، کمپیوٹر وغیرہ کی تعلیم دے سکیں، یہ کام اگلے ماہ سے شروع کر دیا جائے گا۔

 

نقوی نے کہا کہ 3ای-ایجوکیشن (تعلیم)، امپلائمنٹ (روزگار اور روزگار کے موقع) اور امپاورمنٹ (سماجی و اقتصادی-امپاورمنٹ)’ پروگرام کے تحت اگلے پانچ سالوں میں پری میٹرک، پوسٹ میٹرک اور میرٹ کم-مینس وغیرہ منصوبوں کے ذریعہ 5 کروڑ طلباء کو اسکالر شپ دی جائے گی، جن میں 50 فیصد سے زیادہ لڑکیوں کو شامل کیا جائے گا۔ ان میں اقتصادی طور پر پسماندہ طبقے کی لڑکیوں کے لئے 10 لاکھ سے زیادہ بیگم حضرت محل بالیکا اسکالر شپ بھی شامل ہیں۔

 

نقوی نے کہا کہ جن علاقوں میں تعلیمی اداروں کے لئے بنیادی سطح کی سہولت نہیں ہے وہاں وزیر اعظم عوامی ترقیاتی پروگرام (پی ایم جے وی کے) کے تحت پولی ٹیکنیک، آئی ٹی آئی،گرلس ہاسٹل، اسکول، کالج، گروکل ٹائپ رہائشی کالج، کامن سروس سینٹر وغیرہ کاجنگی پیمانہ پر تعمیری کام شروع کیا گیا ہے۔

 

 

نقوی نے کہا کہ ’پڑھو اور بڑھو‘ بیداری مہم کے تحت ان تمام دور دراز علاقوں میں جہاں سماجی اور اقتصادی طور پر پسماندگی ہے اور لوگ اپنے بچوں کو تعلیمی اداروں میں نہیں بھیج پا رہے ہیں، ان والدین کو اپنے بچوں کو تعلیمی اداروں میں بھیجنے کیلئے بیدار اور حوصلہ افزائی کی جائے گی۔ اس میں خاص طور پر لڑکیوں کی تعلیم پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔ساتھ ہی تعلیمی اداروں کو سہولت اور ذرائع فراہم کرنے کے لئے مؤثر کام کیا جائے گا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *