نونرمان سیناکارکنان نے سانگلی میں شمالی ہندوستانیوں کودوڑادوڑاکرپیٹا

Share Article
mns
مہاراشٹرمیں شمال ہندوستانیوں کے ساتھ مارپیٹ کراپنی سیاست کی زمین تیارکرنے والی راج ٹھاکرے کی پارٹی ’مہاراشٹرنونرمان سینا‘(منسے)نے ایک بارپھرشمال ہندوستانیوں کے خلاف ہنگامہ آرائی شروع کردی ہے۔مہاراشٹرکے سانگلی میں منسے کے کارکنوں کاایک ویڈیوسامنے آیاہے جس میں وہ لوگوں کوسڑکوں پردوڑا دوڑاکرپٹائی کررہے ہیں۔10اکتوبربروزمنگل کوایم این ایس کے کارکنان ہاتھ میں لاٹھی لیکرسڑکوں پراترے اورسامنے جوشمال ہندوستانی دکھااس کی بے رحمی سے مارپیٹ کرنے لگے۔یہاں تک کہ لوگوں کوڈنڈے اورلات گھونسوں سے پٹائی کی گئی۔دراصل راج ٹھاکرے کی پارٹی نے سانگلی میں ’لاٹھی چلاؤبھیاہٹاؤ‘نام سے ’پر-پرانتیہ‘ مہم شروع کی ہے۔منسے کاالزام ہے کہ سانگلی میں واقع ایم آئی ای ڈی سی میں ’پر-پرانتیوں ‘کونوکری دی جارہی ہے۔یہاں 80فیصدنوکری صرف اورصرف مراٹھی لوگوں کودی جائے۔
واضح رہے کہ فروری 2008میں راج ٹھاکرے نے شمالی ہندوستانیوں کے خلاف ایک آندولن کی قیادت کی۔2009میں ایگزام دینے ممبئی آئے ہندی زبان والے امیدواروں کی پٹائی کرکے منسے سرخیوں میں آئی تھی۔ٹھاکرے کی مہاراشٹرنونرمان سینا(منسے)نے حال ہی میں گجراتی بھاشیوں کے خلاف بھی آندولن چھیڑاتھا۔اس کے تحت منسے کارکنوں نے دادراورماہماعلاقے میں کئی دکانوں کے گجراتی زبان میں لگے بورڈ زبردستی ہٹادےئے۔پولیس نے بورڈ ہٹانے والے منسے کے سات کارکنوں کوحراست میں بھی لے لیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *