دہرادون میں کندھمال جیسا معاملہ:نابالغ لڑکی نے دیا بچی کو جنم

Share Article
baby-demo
گذشتہ دنوں اڑیسہ کے کندھمال ضلع میں آدیواسی رہائشی اسکول میں ایک نابالغہ طالبہ نے اپنے ہاسٹل میں ایک بچی کوجنم دینے کا سنسنی خیزمعاملہ سامنے آیاتھا۔ذرائع کے مطابق نابالغ طالبہ نے اسکول میں بچی کو جنم دیا اور اس بات کو اسکول انتظامیہ نے چھپانے کی بھی کوشش کی۔ تاہم یہ شرمناک معاملہ سامنے آتے ہی انتظامیہ نے جانچ شروع کردی ہے۔اڑیسہ کے بعد اب دہرادون کی ایک نابالغہ عصمت دری متاثرہ نے بچی کو جنم دیا ہے۔اڑیسہ اوردہرادون معاملے میں فرق صرف اتناہے کہ اڑیسہ کے کندھمال ضلعے میں نابالغہ ریپ متاثرہ بچی نے اسکول ہاسٹل میں بچی کوجنم دیاتھا لیکن دہرادون میں نابالغہ ریپ متاثرہ نے اسپتال میں بچی کوجنم دیاہے۔
موتھرولا رہائشی ایک نابالغہ متاثرہ نے دون مہیلا اسپتال میں بچی کوجنم دیاہے۔ متاثرہ کو لے کر اسپتال پہنچی خاتون نے اس کے ساتھ عصمت دری ہونے کی اطلاع دی ہے۔ڈلیوری کے بعد ماں اورنوزائیدہ بچی کی حالت مستحکم ہے۔ اطلاعات کے مطابق پیر کے صبح ایک خاتون اپنے ساتھ 17 سال کی نابالغہ کو لے کر اسپتال پہنچی۔ اسپتال میں خاتون نے بتایا کہ لڑکی کے ماں باپ اسے چھوڑ چکے ہیں۔ کچھ عرصہ پہلے اس کی عصمت دری ہوئی ہے۔ انہیں کئی ماہ بعد ریپ ہونے کی جانکاری ملی۔ ایسے میں اسقاطِ حمل خطرناک ثابت ہو سکتا تھا۔
خاتون کے اس بیان پر ڈاکٹروں نے معاملہ کی جانکاری پہلے پولیس کو دینے کی صلاح دی۔ اسی دوران نابالغہ کو دردِ زہ ہونے لگا۔ کچھ ہی دیر میں نابالغہ نے ایک بچی کو جنم دیا۔ذرائع کے مطابق نابالغہ کو لے کر پہنچی خاتون بھی اس سے تعلق زیادہ معلومات نہیں دے پائی۔ وہیں نابالغہ فی الحال ایک پرائیویٹ اسپتال میں داخل ہے۔ اسپتال حکام نے اس معاملہ میں کچھ بھی کہنے سے انکار کیا ہے۔ بچے کی پیدائش کے بعد ماں اور بچی کی صحت بہتر ہے۔ حالاں کہ انہیں ڈاکٹروں کی نگرانی میں رکھا گیا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *