جھارکھنڈ میں مانجھی کی پارٹی این ڈی اے کے ساتھ ہوگی انتخابی میدان میں!

Share Article

 

ہندوستانی عوام مورچہ کی قومی جمہوری اتحاد میں واپسی کا امکان ہے۔جھارکھنڈ اسمبلی انتخابات میں ہم پارٹی کے ووٹ بینک کو این ڈی اے میں ’ٹرانسفر‘ کرنے کے لئے اتحادی پارٹی آل انڈیا جھارکھنڈ اسٹوڈیٹس یونین کو ذریعہ بنایا جا سکتا ہے۔ ایسے میں جھارکھنڈ اسمبلی انتخابی میدان میں ووٹروں کے درمیان ہم پارٹی این ڈی اے اتحاد کے بینر تلے نظر آ سکتی ہے۔

این ڈی اے کی اتحادی پارٹی آل انڈیا جھارکھنڈ اسٹوڈیٹس یونین کے ساتھ مل کر ہم کے جھارکھنڈ اسمبلی انتخابی میدان میں اترنے کو لے کر بات چیت آخری مراحل میں ہے۔ سیاسی ذرائع کے مطابق اس کے پیچھے جھارکھنڈ کی ایک درجن سیٹوں پر مانجھی /بھوئیاں ووٹ بینک کا اہم پوزیشن میں ہونا ایک بڑی وجہ سمجھی جا رہی ہے۔ اگر جھارکھنڈ میں ہم پارٹی کی بنیادی ووٹ بینک این ڈی اے میں ٹرانسفر ہو جاتا ہے تو اس کا اثر بہار اسمبلی انتخابات میں دیکھنے کو مل سکتا ۔.

 

Image result for Manjhi's party will be with the NDA in Jharkhand in the election field!

سابق وزیر اعلی کے ساتھ ہندوستانی عوام مورچہ کے قومی صدر جیتن مانجھی نے اتوار کو ’ہندوستھان سماچار‘ کے ساتھ خصوصی بات چیت میں انکشاف کیا کہ ہم پارٹی جھارکھنڈ میں اے جے ایس یو کے ساتھ اسمبلی انتخابات لڑنے جا رہی ہے۔

ہندوستانی عوام مورچہ کے قومی صدر جیتن مانجھی نے بتایا کہ اے جے ایس یو صدر سدیش مہتو کے ساتھ ذاتی تعلقات کی وجہ سے اتحاد کو حتمی شکل دی جا رہی ہے۔ آخری دور کی بات چیت چل رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نشستوں کی تعداد کو لے کر دونوں جماعتوں کے درمیان کوئی تنازعہ نہیں ہے۔

مانجھی نے پوچھے جانے پر کہا کہ جھارکھنڈ میں ہم مہاگٹھبدھن کا حصہ نہیں ہے۔ ایسے میں مہاگٹھ بندھن کی دوسری پارٹیاںجھارکھنڈ میں اسمبلی انتخابات میں کس طرح شامل ہوں گی؟ یہ فیصلہ جھارکھنڈ مہاگٹھبدھن کی قیادت کو طے کرنا ہے۔
سابق وزیر اعلی جیتن مانجھی نے اس بات سے صاف انکار کیا کہ بہار میں ہم این ڈی اے کے جزو کے طور پر انتخابی میدان میں اترے گی۔ہم کے قومی جنرل سکریٹری اسسٹنٹ قومی ترجمان دھریندر کمار سنہا عرف دھریندر منا، ضلع صدر ٹو ٹو خان، سینئر لیڈر رومت سمیت کئی دیگر لیڈر اس موقع پر موجود تھے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *