مہاپنچایت کا تغلقی فرمان،’ملزم اورریپ متاثرہ لڑکی کوزندہ جلادو‘

Share Article
panchayat
جھارکھنڈ کے چائی باسا میں ایک مہاپنچایت کے تغلقی فرمان سنائے جانے کا معاملہ سامنے آیاہے۔ دراصل،چائی باسا میں منجھاری تھانہ علاقے میں چچا نے 13سال کی نابالغ بھتیجی سے ریپ کیا۔وہ حاملہ ہوگئی۔ اس معاملے کولیکر گاؤں میں مہاپنچایت بلائی گئی۔مہاپنچایت نے ملزم 28سالہ روبن ملزم قرار دیتے ہوئے 5لاکھ کا جرمانہ لگایاگیا۔ساتھ ہی ملزم ومتاثرہ کوزندہ جلانے کا فرمان سنادیا۔
بتایاجارہاہے کہ یہ فرمان مہاپنچایت نے منگل کوشام قریب پانچ بجے سنایا۔ اس دوران ’ہو آدیواسی سماج یووا مہاسبھا‘ کے عہدیداران اورگاؤں والے موجودتھے۔ پہلے مہاپنچایت نے ریپ کے ملزم روبن کوپنچایت میں بلایا جہاں اس نے جرم قبول کرلیا۔اس کے بعد مہا پنچایت نے انہیں سزاسنائی۔
اس واقعے کے سامنے آنے کے بعد انتظامیہ میں ہڑکمپ مچ گیا۔ ایس پی کرانتی کمار نے ایس ڈی پی او امرکمارپانڈے کوجانچ کرنے کی ہدایت دےئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ معاملہ کافی سنگین ہے۔ لہٰذا اس کی جانچ کرائی جارہی ہے۔ ملزموں پرسخت کارروائی کی جائے گی۔
گاؤں والے کے مطابق، ملزم روبن عرف مان سنگھ کونکل اپنے بڑے بھائی کے یہاں کام کرتا تھا۔ قریب دوسال سے روبن متاثرہ کے گھرمیں رہنے لگا ۔اسی بیچ روبن نے ڈرا-دھمکاکر 6کلاس میں پڑھنے والی 13سال کی بھتیجی کے ساتھ ریپ کیا۔جس سے وہ حاملہ ہوگئی۔ معاملہ اجاگرہونے کے بعد کچھ ہفتے پہلے بھی گاؤں میں پنچایت بلائی گئی تھی، لیکن روبن پنچایت خود پیش نہیں ہوا۔پھرمنگل کومہاپنچایت میں وہ آیا جہاں اسے فرمان سنایاگیا۔
بہرکیف منجھاری تھانہ علاقے میں ایک 13سال کی لڑکی ریپ کے بعد حاملہ ہوگئی تو گاؤں والوں نے مہاپنچایت بلائی۔ پھرریپ کرنے والے ملزم اورمتاثرہ پر پانچ لاکھ روپے کا جرمانہ لگاکر انہیں زندہ جلانے کا فرمان سنادیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *