ایل پی یو کی سائنسداں روبیہ خورشید نے ایجاد کی ذیابیطس کی سستی ہربل دوا

 

سائنسداںروبیہ کے مطابق دوا مکمل طور پر غیرسنتھیٹک، جس کے کوئی منفی اثرات نہیں

جالندھر، 21 نومبر (ہ س)۔ لولی پروفیشنل ر یونیورسٹی (ایل پی یو) کے اسکول آف فارماسیوٹیکل سائنسز کی پی ایچ ڈی اسکالر روبیہ خورشید نے ہربل میڈیسن تیار کی ہے، جو ذیابیطس کا سستا اور پکا علاج کرے گی۔ روبیہ نے امریکہ میں اپنی پیٹنٹ ہربل دوا کی فارمولیشن 15 نوبل انعام یافتگان، 6000 سائنسدانوںاور 600 سے زیادہ فارمیسی انڈسٹری کے قدآور لوگوں کے ساتھ کے ساتھ اشتراک کیا۔

یہ موقع تھا ٹیکساس امریکہ کے ہنری بی گونزالویز کنونشن سینٹر میں منعقدہ دنیا کی ممتاز فارمیسی کانفرنس اے اے پی ایس (امریکن ایسوسی ایشن آف فارماسیوٹیکل سائنٹسٹس) فارم سائی 360. سائنسدانوں کے اجتماع کا۔ امید کی جا رہی ہے کہ جلد ہی انسانیت کے عام فائدہ کے لئے اس پیٹنٹ کے لئے فائل ہو چکی دوا کا کمرسلائزیشن بھی ہو جائے گا۔ روبیہ وہ چاہتی ہیں کہ تمام طبی فارمولیشن کو بہت ہی سستی پروڈکٹس میں تیار کیا جائے تاکہ ان کا استعمال آسان اور سستے طریقے سے کیا جا سکے ۔ اس کی دوا دو اہم اجزاء میں آسانی سے دستیاب ہے:۔ ہلدی اور دوستانہ بیکٹیریا(پرو۔بایوٹیکس)۔

روبیہ کو ایسے فارمولیشن کو تیار کرنے کی گہری دلچسپی ہے جو ذیابیطس کے مریضوں تک پہنچ سکے ۔ سماجی طور پر مفید پروڈکٹ کے تئیں روبیہ کو مبارکباد دیتے ہوئے ایل پی یو کے چانسلر اشوک متل نے انہیں اس طرح کی تحقیق جاری رکھنے کے لئے حوصلہ افزائی کی۔ باغ مہتاب، سرینگر کی ایل پی یو میں پی ایچ ڈی اسکالر روبیہ آگے کینسر کے علاج پر ایک اور اہم تحقیق کرنا چاہتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *