بی جے پی امیدواروں کے خلاف چراغ پا ہیں ووٹرس، کہا:’امیدوار بدلو ورنہ ووٹ سے بدل دیں گے‘

Share Article

 

mahesh-sharma-vk-singh

لوک سبھا انتخابات کیلئے بساط بچھ چکی ہے، اس کے ساتھ ہی جوڑ توڑ شروع ہو گیا ہے، لیکن نریندر مودی حکومت کے دو وزراء کے خلاف کئی ووٹرس مشتعل ہو گئے ہیں۔ یہ وزیر ہیں مہیش شرما اور وی کے سنگھ۔ مہیش شرما گوتم بدھ نگر اور وی کے سنگھ غازی آباد سے ایم پی ہیں۔ مہیش شرما کے پارلیمانی حلقہ کے گریٹر نوئیڈا علاقے میں کئی نوجوان ’مودی تجھ سے گریز نہیں، مہیش شرما تیری خیر نہیں‘ جیسے نعروں سے ان کی مخالفت کر رہے ہیں۔

یہاں دنکور کے پاس استولی گاؤں میں کچھ نوجوانوں نے اس نعرے کے ساتھ مظاہرہ بھی کیا ہے۔ کئی لوگ سوشل میڈیا پر بھی مہیش شرما کے خلاف مہم چلا رہے ہیں۔ ان ووٹرس کا کہنا ہے کہ شرما نے پانچ سال میں ان کے علاقے میں نہ تو کچھ خاص کام کیا اور نہ ہی وقت دیا۔ یہ لوگ بی جے پی کو صاف پیغام دے رہے ہیں کہ اگر امیدوار نہیں بدلا گیا تو ووٹ کے ذریعے وہ خود بدل دیں گے۔

ادھر، یوپی کے غازی آباد میں بھی بی جے پی کارکنان کی مانگ ہے کہ مقامی امیدوار اتارا جائے، یہاں سے ریٹائرڈ جنرل وی کے سنگھ ایم پی ہیں، وہ پہلی بار 2014 میں انتخابات لڑے اور مودی لہر میں جیت کر وزیر بھی بنے۔ اب بی جے پی کے مقامی رہنما نہیں چاہتے کہ انہیں دوبارہ ٹکٹ ملے۔ کئی لیڈروں نے دہلی بی جے پی کے دفتر جاکر ان کی مخالفت کی ہے۔

بتا دیں کہ وی کے سنگھ راجپوت برادری سے آتے ہیں اور غازی آباد میں راجپوت ووٹروں کا کافی دبدبہ ہے۔مانا جاتا ہے کہ یہی وجہ ہے کہ بی جے پی قیادت نے نسلی فارمولیشن لگانے کے لئے وی کے سنگھ کو غازی آباد سے الیکشن لڑایا تھا۔ جیت حاصل کرنے کے بعد وی کے سنگھ کو وزیر کا عہدہ بھی مل گیا، لیکن غازی آباد میں مقامی کارکن اس بات سے ناراض ہیں کہ وی کے سنگھ نے پارلیمانی حلقہ میں زیادہ وقت نہیں گزارے اور یہی وجہ ہے کہ لوگوں میں ان کے تئیں ناراضگی ہے۔

گزشتہ لوک سبھا انتخابات میں کئی لیڈر مودی لہر میں سیٹ جیتنے میں کامیاب رہے تھے، لیکن ان انتخابات میں پوزیشن تبدیل نظر آ رہی ہے اور یہی وجہ ہے کہ مقامی کارکنوں کی ممکنہ امیدواروں کے تئیں ناراضگی سامنے آ رہی ہے۔ مرکزی وزیر مہیش شرما نے حال ہی میں اپنے پارلیمانی حلقہ کے ایک گاؤں کا دورہ کیا تھا، جہاں انہیں لوگوں کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

گوتم بددھ نگر پارلیمانی حلقہ میں دیہی علاقوں میں گوجر ووٹروں کا دبدبہ ہے، شہری علاقوں میں مہیش شرما کا مینڈیٹ سمجھا جاتا ہے، ایسے میں پارٹی قیادت کی فکر بڑھنے فطری ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *