عام انتخابات2019: انوپریا پٹیل نے مودی پرحملہ آورہونے کے بعد پرینکا گاندھی سے کی ملاقات

Share Article
Anupriya-Patel
اتر پردیش میں بی جے پی کیلئے سب کچھ اچھا نہیں چل رہا ہے۔ بی جے پی صدر امت شاہ نے سہیلدیو بھارتیہ سماج پارٹی اوم پرکاش راج بھر کو منانے کا دعوی کیا تو دوسری طرف ان کی قریبی ساتھی اور مرکزی وزیر انوپریا پٹیل نے ایک کے بعد ایک اپنے ساتھی بی جے پی پر کئی حملے کئے۔ مرکزی وزیر انوپریا پٹیل نے مودی حکومت پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ، بھارتیہ جنتا پارٹی کو اپنے اتحادیوں کے مسائل سے کوئی لینا دینا نہیں۔ ’اپنادل‘ اب اپنا راستہ منتخب کرنے کے لئے آزاد ہے۔جلد ہی اپنا دل کی میٹنگ میں آگے کی حکمت عملی طے ہو جائے گی۔
انوپریاپٹیل کا کہنا ہے کہ، ہماری تنظیم اپنے امیدواروں کو کھڑا کرنے کے لئے مکمل طور پر تیار ہے۔ہم نے بی جے پی کے سامنے کچھ مسائل رکھی تھی۔20 فروری تک کا وقت دیا تھا بی جے پی کو حل کے لئے، لیکن بی جے پی کو اپنی اتحادی پارٹیوں سے کوئی لینا دینا نہیں۔

پرینکا سے ملیں انوپریا
اپنے ہی سرکاراور اتحادی بی جے پی پر حملے کے بعد اپنا دل کی سرپرست انوپریا پٹیل اور صدر آشیشپٹیل نے جمعرات کو کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا اور جیوتیرادتیہ سندھیا کے ساتھلمبی میٹنگکی ہے۔ یہ میٹنگ پرینکا گاندھی کی رہائش گاہ پر ہوئی، اس میٹنگ میں دونوں رہنماؤں نے کانگریس سے اتحاد کے امکانات پر وسیع تبادلہ خیال کیا ہے۔ دوسری طرف ایس بی ایس پی کے سربراہ اوم پرکاش راج بھر بھی سماج وادی پارٹی کے رابطے میں بتائے جا رہے ہیں۔

اوم پرکاش راج بھر بھی سماج وادی پارٹی کے رابطہ میں
غور طلب ہے کہ بی جے پی کے دونوں ساتھی عرصے سے ناراض چل رہے ہیں۔اپنا دل جہاں مسلسل ریاستی حکومت اور بی جے پی کی ریاستی یونٹ پر غفلت کا الزام لگا رہا ہے۔ وہیں راج بھر او بی سی ریزرویشن میں تقسیمکے لئے قائم سماجی انصاف سمیتی کی رپورٹ میں کی گئی سفارشیں لاگو کروانے پر اڑے ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ انوپریا۔ آشیش کی پرینکا کے ساتھ ہوئی تقریبا تین گھنٹے کی میراتھن میٹنگ میں اتحاد کی تمام امکانات پر غور کیا گیا۔آخری فیصلے کے لئے دونوں لیڈران نے کانگریس سے ایک ہفتے کا وقت مانگا ہے۔ذرائع بتاتے ہیں کہ خود اکھلیش یادو نے بھی انوپریا پٹیل سے بات کہ تھی لیکن اس وقت اپنا دل کی جانب سے انہیں کوئی مثبت پیغام نہیں دیا گیا تھا۔ کانگریس کے ایک سینئر لیڈر کے مطابق اگر گٹھ بندھن ہوا تو پارٹی کی قیادت میں بننے والے گٹھ بندھن کو انوپریاکے طور پر او بی سی کلاس کی ایک بڑا چہرہ مل جائے گا۔کانگریس میں ایسے بڑے اوبی سی چہرے کا فقدان ہے۔ جبکہ اپنا دل کا ایک بڑا گروپ لمبی سیاست کیلئے کانگریس کا ہاتھ تھامنے کے حق میں ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *