اب دہلی کی عدالت میں ہو گی مظفرپور شیلٹر ہوم ریپ کیس کی سماعت

Share Article

بہار کے مظفرپور شیلٹر ہوم ریپ کیس کو لے کر سپریم کورٹ نے ایک بار پھر سے نتیش حکومت کو پھٹکار لگائی ہے

 

بہار کے مظفرپور شیلٹر ہوم ریپ کیس کو لے کر سپریم کورٹ نے ایک بار پھر سے نتیش حکومت کو پھٹکار لگائی ہے۔ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے کہا کہ یہ بدقسمتی ہے کہ آپ بچوں کے ساتھ اس طرح کا برتاؤ کرتے ہیں۔ آپ اس طریقہ کی چیزوں کی اجازت نہیں دے سکتے۔ سپریم کورٹ نے اس معاملہ کو بہار کی سی بی آئی عدالت سے دلی کے ساکیت کورٹ میں منتقل کر دیا ہے۔

 

 

سپریم کورٹ نے بہار حکومت کو سخت پھٹکار لگاتے ہوئے دو بجے تک تمام سوالات کے جواب دینے کو کہا ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ دہلی سے پٹنہ دو گھنٹے کا راستہ ہے۔ ہم چیف سکریٹری کو بھی یہاں کھڑا کر سکتے ہیں۔

 

چیف جسٹس نے بہار حکومت کے وکیل سے کہا کہ اگر پوری معلومات نہیں دے سکتے ہیں تو کسی آفیسر کو بلائیے، اب بہت ہو گیا۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ ہم حکومت نہیں چلا رہے ہیں لیکن ہم آپ سے یہ جاننا چاہتے ہیں کہ آپ کس طرح حکومت چلا رہے ہیں؟

 

 

سپریم کورٹ نے ریاستی حکومت سے کہا کہ آپ کچھ مشکل سوالوں کے جواب دینے کے لئے تیار رہیں۔ اس پھٹکار کے ساتھ ہی سپریم کورٹ نے بہار کے سبھی معاملوں کو دلی منتقل کر دیا۔ عدالت کے اس فیصلہ کے بعد سبھی ملزمان کا ٹرائل بھی اب دلی میں ہی چلے گا۔ اس کے لئے سپریم کورٹ نے دلی کی ساکیت کورٹ کو منتخب کیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *