دنیا میں سب سے زیادہ نوبل جیتنے والا شہر بنا کولکاتہ

Share Article

مغربی بنگال کی راجدھانی کولکاتہ دنیا کا پہلا ایسا شہر بن گیا ہے جہاں کے 6 دانشوروں کو نوبل انعام مل چکا ہے۔ ایک دن پہلے ہی ابھیجیت ونائک بنرجی کو معاشیات کے زمرے میں نوبل انعام دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔ اس سے بنگال سمیت پورے ملک میں خوشی کی لہر ہے۔ اس شر ف کے حاصل ہوتے ہی کولکاتہ دنیا کا واحد شہر بن گیا ہے جس نے چھ نوبل اور ایک آسکر ایوارڈجیتا ہے۔ کولکاتہ سے متعلق جن لوگوں کو نوبل انعام ملا ہے وہ ہیں رونالڈ راس، رابندر ناتھ ٹیگور،سی وی رمن، مدر ٹریسا، امرتیہ سین اور ابھیجیت بنرجی۔

سب سے پہلے رونالڈ راس کو 1902 میں نوبل انعام ملا تھا۔ انہیں میڈیسن کے شعبہمیں ملیریا اور دیگر ویکٹرسے پیدا ہونے والی بیماریوں کو پھیلانے والے مچھروں سے بچاؤ کے لیے کی گئی ایجاد کے لئے نوبل انعام سے نوازا گیا تھا۔ وہ 1898 میں کولکاتہ آئے تھے اور اس تلاش کا آغاز کیا تھا جس کے بعد انہیں دنیا بھر سے ملیریا کے خاتمے کے لئے شاندار ایجاد کرنے کیلئے نوبل انعام دیا گیا تھا۔ اس کے بعد 1913 میں گرودیو رابندر ٹیگور نے ادب کے میدان میں یہ ایوارڈ جیتا تھا۔ وہ پہلے غیر یورپی تھے جنہیں نوبل انعام سے نوازا گیا تھا۔ ان کی ناول گیتانجلی کا انگریزی میں ترجمہ کیا گیا تھا جس پر انہیں یہ اعزاز ملا تھا۔

اس کے بعد1930 میں سائنسداں سی وی رمن کو نوبل انعام سے نوازا گیا۔فزکسکے شعبہمیں ملے اس نوبل انعام کو حاصل کرنے والے سی وی رمن نہ صرف بھارت بلکہ ایشیا ئی براعظم کے پہلے سائنسداں تھے۔ 1860 سے 1935 تک انہوں نے کولکاتہ کے بئوبازار میں واقع انڈین ایسوسی ایشن فار دی کلٹیویشن آف سائنس کے ساتھ جڑ کر کام کیا تھا اور رمن افیکٹ اصول انجام کیا تھا۔

سنت مدر ٹریسا کو 1979 میں امن کے لئے یہ اعزاز دیا گیا تھا۔ غریبوں کی ترقی، تعلیم اور صحت کے لئے انہوں نے جو کام کیا تھا اس کے لئے انہیں نوازا گیا تھا۔ 1950 میں کولکاتہ میں انہوں نے مشنریز آف چیریٹی قائم کی جو دنیا بھر کے مختلف ممالک میں کام کرتی ہے۔ اس کے بعد 1998 میں ماہر اقتصادیات امرتیہ سین کو پہلے بنگالی ماہر اقتصادیات کے طور پر نوبل انعام ملا تھا۔ ان کی پیدائش شانتی نکیتن میں ہوئی تھی اور بنگ بھنک سے قبل انہوں نے ڈھاکہ میں تعلیم حاصل کی تھی۔ برطانیہ اور امریکہ میں ہی انہوں نے زندگی کا زیادہ تر وقت گزارا ہے۔ فی الحال وہ کولکاتہ میں رہتے ہیں۔

اب معاشیات کے میدان میں ہی ابھیجیت بنرجی کو یہ اعزاز ملا ہے۔ ان کے ساتھ ان کی بیوی ایستھر ڈفلوکو بھی یہ اعزاز ملا ہے۔ 2013 میں دونوں میاں بیوی نے مل کر مشترکہ طور پر “عبدالطیف جمیل پاورٹی آکشن لیب” کی بنیاد رکھی تھی۔ اس کا مقصد غربت دور کرنے کے لئے تحقیق کرنا تھا اور ان کے اصولوں کی وجہ سے دنیا بھر میں درجن بھر سے زائد ممالک میں غربت دور ہوئی ہے۔اگر آسکر ایوارڈ کی بات کی جائے تو ستیہ جیت رے کو یہ اعزاز 1992 میں پہلے ہندوستانی کے طور پر ملا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *