جسمانی تعلقات بنانے کے بعد لڑکیوں میں آتی ہیں 7 بڑی تبدیلی

Share Article

hot

سیکس(جسمانی تعلقات) کسی بھی رشتے کے لئے بڑابدلاؤلیکر آتا ہے۔ اموشنس کے ساتھ ہی کپل کے درمیان باؤنڈگ کو بھی یہ کئی طرح سے متاثر کرتا ہے، لیکن بات یہیں پر ختم نہیں ہو جاتی۔ جنسی تعلقات بنانے کے بعد لڑکیوں کے جسم میں بھی کئی طرح کی تبدیلی آتی ہیں۔
How-to-Manage-Your-Sex-Life-After-Cancer-What-Changes-Should-You-Expect2-600x375

سیکس کے بعد مردوں کے مقابلے خواتین کے جسم میں دماغ سے زیادہ آکسیٹاسن اور ڈوپامائن کی ہارمون چھوڑتا ہے۔ اس کا ان کے اموشنس کے ساتھ ہی برتاؤ پر بھی اثر پڑتا ہے۔ یہ اثر صرف کچھ دیر کا نہیں بلکہ دھیرے دھیرے پوری پرسنائلٹی پر بھی اثر ڈالتا ہے۔

young_couple_in_love
جنسی تعلقات کے آغاز خواتین میں اپنی باڈی کو لے کرکنفیڈینس( اعتماد) کو بھی بڑھاتا ہے۔جب پارٹنر ایسا ہو جو آپ کی ہر چیز سے پیارکرے تو کنفیڈینسبڑھنا ظاہر سی بات ہے۔

Stocksy_txp94187554udI100_Medium_1030495-600x400
سیکس کے دوران اور اس کے بعد بریسٹ زیادہ فرم ہو جاتے ہیں۔ دراصل، جنسی تعلقات کے دوران اعصابی نظام بھی رےئکٹ کرتا ہے اور بریسٹ زیادہ فرم ہو جاتے ہیں۔حالانکہ یہ نہ سمجھیں کہ بریسٹ کی یہ فرمنیس بنی رہے گی۔ دماغ اور جسم کے ریلیکس ہوتے ہی یہ بھی چلی جائے گی۔

SFsPP53Tq6rl
جنسی تعلقات کے آغاز کے بعد خواتین کے بریسٹ کا سائز بھی بڑھنے لگتا ہے۔ ایسا ہارمون میں آنے والی تبدیلیوں کی وجہ سے ہوتی ہے۔ حالانکہ ایسا سب کے ساتھ ہو ایسا ضروری نہیں ہے۔
couple-in-love1-600x338

جنسی سرگرمی کے آغاز اور بعد میں خواتین اپنی شرمگاہ میں تبدیلی محسوس کرتی ہیں۔ ایسا انٹرکورس کے دوران باڈی ری ایکشن کے باعث ہوتاہے۔یہی وجہ ہے کہ وقت کے ساتھ وجانا (شرمگاہ)کا سائز بڑھ جاتا ہے۔

sex
جنسی تعلقات کے شروع ہونے کے بعدکلٹرس اور یوٹرس کے ری ایکشن میں بھی بدلا ؤآتا ہے۔انٹرکورس سے رومانٹک ہونے پر وہ سویل ہو جاتے ہیں۔ اس ری ایکشن کو دماغ یاد رکھتا ہے اور سے جنسی ایکسائٹمنٹ کی صورت میں ایسے ہی ہر بار ری ایکٹ کرتا ہے۔

Trend-Most-Romantic-Bedroom-Kisses
کپل کے درمیان جنسی تعلقات کے آغاز انہیں ایک نئی اسٹیج پر لے جاتی ہے۔ اس کا اثر خاص طور پر خواتین پر زیادہ ہوتا ہے کیونکہ ان کے لئے سیکس کے الگ معنیٰ ہوتیہیں۔ یہی وجہ ہے کہ اس اسٹیج کے شروع ہونے کے بعد اکثر خواتین پارٹنر کو لے کر زیادہ اموشنلی سینسیٹو ہو جاتی ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *