ہزاروں کسانوں کا آج پارلیمنٹ مارچ

Share Article
kisan
قومی راجدھانی دہلی میں جمعرات کوملک بھرآئے کسان مطالبات کو لیکر جمعہ کودہلی کے رام لیلا میدان میں جمع ہیں۔ کسانوں کولیکر مرکزی سرکاری کی پالیسیوں کے خلاف آوازبلندکرنے کیلئے ایک بارپھرسے ملک بھرکے کسان دہلی کی سڑکوں پرجمع ہوئے ہیں۔اپنے مطالبات کولیکر مختلف ریاستوں کے کسان دہلی رام لیلامیدان پہنچ گئے ہیں دوروزہ کسان مکتی مارچ کا آج یعنی جمعہ کودوسرا اورآخری دن ہے اورکسان آج اپنی مانگوں کولیکر پارلیمنٹ تک مارچ کریں گے۔ کسان حکومت سے قرض معافی اور فصلوں کا دیڑھ گنا معاوضہ کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ کسانوں کا دہلی پہنچنے کا سلسلہ بدھ کی رات سے شروع ہو گیا تھا۔
آپ کوبتادیں کہ کسان اس بارصرف دومانگوں کولیکریہ آندولن کررہے ہیں۔ان کی پہلی مانگ ہے کہ انہیں قرض سے پوری طرح مکتی دی جائے اوردوسری اپنی مانگ میں فصلوں کی لاگت کا ڈیڑھ گنا معاوضہ چاہتے ہیں۔
خیال رہے کہ کہ جمعرات تک رام لیلا میدان میں ہزاروں کی تعداد کسان جمع ہو گئے تھے اور ابھی بھی ان کے پہنچنے کا سلسلہ جاری ہے۔ جمعرات کو رام لیلا میں ’’ایودھیا نہیں قرض معافی چاہئے ‘‘جیسے نعرے سنائی دےئے۔ ملک کے 200 سے زائد کسان تنظیم 29۔30نومبر کو دہلی کے رام لیلا میدان میں ریلی کرنے جا رہے ہیں۔ گزشتہ تین ماہ میں یہ ان کی تیسری ریلی ہے۔
ادھرسینئرلیڈرشرد یادو نے کسانوں کوحمایت دینے کا اعلان کیاہے۔انہو ں نے کہاکہ میں ملک بھرسے آئے کسانوں کوخطاب کروں گا جواس سرکارمدت کارمیں بیحدپریشان اوربے چین ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *